پیلٹ گن سے خون کا کھیل، کشمیریوں کی تیسری نسل بھی بھارتی درندگی کا شکار

پبلک نیوز: کشمیریوں کی تیسری نسل بھی بھارتی درندگی کا شکار ہے۔ صرف 2 برس میں پیلٹ گن سے ایک ہزار سے زائد کشمیری نوجوان، خواتین اور بچے بینائی سے محروم ہو گئے۔

 

مقبوضہ وادی میں بھارتی افواج کے ظلم وستم جاری ہیں۔ قابض افواج نے وادی میں پیلٹ گنز کے بےدریغ استعمال سے ہزاروں کشمیروں کو ہمیشہ کے لیے بیانئی سے محروم کر دیا۔ رپورٹ کے مطابق گزشتہ 2 سال کے دوران پیلٹ گنز سے ایک ہزار سے زائد نوجوان خواتین اور بچوں کی آنکھیں یا تو کلی طور پر بینائی سے محروم ہو گئیں یا بینائی محض 30 فیصد رہ گئی۔

 

رپورٹ کے مطابق 85 فیصد افراد کے آنکھوں کے حالت گریڈ ڈی اور گریڈ ای کے مریضوں کی طرح ہو گئی ہے جس میں بینائی 70 سے 80 فیصد تک ختم ہوجاتی ہے۔

حارث افضل  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں