صدارتی نظام کی بحث عمران خان کی حکومت کے لیے شرمناک ہے: خواجہ سعد رفیق

لاہور(شاکر محمود اعوان) احتساب عدالت نے پیراگون اسکینڈل میں گرفتار خواجہ بردران کے جوڈیشل ریمانڈ میں 2 مئی تک توسیع کر دی، سابق وفاقی وزیر ریلوے سعد رفیق نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ 73کے آئین کے چھیڑ چھاڑ خطرناک ہو گی اگر ایک بار آئین ختم ہوا تو دوبارہ نہیں بن سکے گا۔

 

احتساب عدالت کے ڈیوٹی جج جواد الحسن پیراگون اسکینڈل کیس کی سماعت کی، جیل حکام نے خواجہ برادرن کو عدالت پیش کیا دوران سماعت عدالت نے استفسار کیا کہ ملزمان کے خلاف ریفرنس کب فائل ہو رہا ہے بغیر ریفرنس کے ملزموں کو کیسے جیل میں رکھا جا سکتا ہے۔ نیب پراسیکوٹر نے بتایاکہ خواجہ برادران کے خلاف ریفرنس اپروول کے مراحل میں ہے۔ منظوری چیرمین نیب نے دینی ہوتی ہے، میں اس پوزیشن میں نہیں ہوں کہ ریفرنس دائر ہونے کی حتمی تاریخ بتا سکوں۔ عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر خواجہ برادران کے جوڈیشل ریمانڈ میں 2 مئی تک توسیع کر دی۔

 

عدالتی کارروائی کے بعد میڈہا سے گفتگو کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ صدارتی نظام کی بحث عمران خان کی حکومت کے لیے شرمناک ہے، عمران خان جیسے تیسے 73 کے آئین کے تحت ہی حکومت میں آئے ہیں۔ خواجہ سعد نے باور کرایا کہ عمران خان اور ان کی حکومت آگ سے کھیل رہی ہے۔ معیشت کا برا حال ہے، حکومت سیاسی مخالفین کا قلع قمع کرنے پر لگی ہے، حکومت اپوزیشن کو گراتے گراتے پاکستان کو نقصان نہ پہنچا دے۔ خواجہ برردان کی پیشی کے موقع سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے، پولیس نے بئیریر لگا کر کارکنوں کو احاطہ عدالت کے اندار جانے سے روک دیا۔

عطاء سبحانی  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں