ریموٹ کنٹرول جموریت نہیں چل سکتی، خواجہ سعد رفیق

لاہور(شاکر محمود) پیراگون سوسائٹی کیس میں خواجہ بردران کے جوڈیشل ریمانڈ میں 16 جولائی تک توسیع کر دی گئی ہے۔ احتساب عدالت کے باہر خواجہ سعد رفیق اپوزیشن رہنماؤں کی گرفتاریوں اور ٹرینوں کے بڑھتے حادثات پر حکومت پر برس پڑے اور بولے ملک میں ریموٹ کنٹرول جموریت نہیں چل سکتی۔

 

احتساب عدالت میں پیراگون اسکینڈل کی سماعت ہوئی، جس میں جیل حکام نے پیراگون اسکینڈل میں گرفتار خواجہ برادرن کو پیش کیا۔ پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی کیس کی سماعت احتساب عدالت کے جج جواد الحسن نے کی۔ عدالت نے ریفرنس میں نامزد دیگر تین ملزموں ندیم ضیاء، عمر ضیاء اور فرحان علی کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کرتے ہوئے خواجہ بردران کے جوڈیشل ریمانڈ میں 16 جولائی تک کی توسیع کر دی گئی ہے۔ عدالت نے آئندہ سماعت پر ملزموں کو ریفرنس کی کاپیاں فراہم کرنے کی ہدایت بھی کی ہے۔


عدالت کے باہرمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے اپوزیشن سے گرفتاریوں اور دیگر مسائل پر دل کے پھپھولے پھوڑ ڈالے اور بولے کے حکومت ہر طبقے کے ساتھ حالت جنگ میں آچکی ہے، کیا اس طرح ملک چل سکتا ہے؟ خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ جب حکومت بدلتی ہے ہم جیل چلے جاتے ہیں، اپوزیشن حکومت گرانا نہیں چاہتی، اگر مفاہمت اور ڈائیلاگ کی بات کریں تو اسے این آر او کہہ دیتے ہیں۔ حکومت کی توجہ پروڈکش آڈر روکنے میں لگی ہوئی ہے اور کچھ اسے نظر نہیں آرہا، ہر طبقہ پریشان ہے، صحافی پریشان ہیں۔

 

خواجہ سعد رفیق نے ٹرینوں کے برھتے حادثات پر کہا کہ آئے دن ٹرین حادثے ہو رہے لوگ اپنی جانوں سے جا رہے ہیں، ریلوے حادثوں میں اضافہ تشویشناک ہے، کھڑی ٹرین میں ریل گاڑیاں لگ رہی ہیں۔ حکمرانوں کی نااہلی سے لوگوں نے ٹرین پر سفر کرنا چھوڑ دیا ہیں، ہم نے ریلوے میں 15 سال کا سفر5 سال میں طے کیا، جب توجہ پرڈوکشن آرڈر بند کرانے اور اپوزیشن رہنماؤں کو جیلوں میں ڈالنے پر ہو گی تو پھر یہ یہی حال ہو گا۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں