لیگی رہنماء حافظ نعمان کو درخواست ضمانت مسترد کرتے ہوئے گرفتار کر لیا گیا

لاہور (پبلک نیوز) نیب نے مسلم لیگ (ن) کے سابق رکن پنجاب اسمبلی اور لاہور پارگنگ کمپنی کے سابق سربراہ حافظ نعمان کی ضمانت مسترد ہونے پر لاہور ہائیکورٹ سے گرفتار کر لیا ہے۔ حافظ نعمان پر پارکنگ کمپنی کے ٹھیکہ دینے منظور کمپنی کو نوازنے کا الزام ہے۔


لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس طارق عباسی کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے حافظ نعمان کی درخواست ضمانت پر سماعت کی، حافظ نعمان عدالت میں پیش ہوئے، ان کے وکیل نے بتایا کہ حافظ نعمان کمپنی کے پہلے اعزازی سربراہ تھے اور صرف رسمی طور پر بورڈ اجلاس میں حصہ لیتے رہے، وکیل نے دعویٰ کیا کہ حافظ نعمان نے لاہورپارکنگ کمپنی سے کسی بھی مد میں ایک روپیہ بھی وصول نہیں کیا اور قانون کے مطابق ٹھیکہ دیا۔

 

نیب پراسیکیوٹر نے بتایا کہ حافظ نعمان نے من پسند افراد کو پارکنگ کا ٹھیکہ دیا اور قومی خزانے کو نقصان پہنچایا، 246 مقامات سے صرف 33 مقامات پر پارکنگ کے انتظامات کیے گئے، 30 جون کو حافظ نعمان کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے گئے تھے، نیب پراسیکیوٹر نے مزید کہا حافظ نعمان کی عبوری ضمانت مسترد کی جائے۔ لاہور ہائیکورٹ کے دو رکنی بنچ نے حافظ نعمان کی عبوری ضمانت مسترد کر دی جس کے بعد نیب نے حافظ نعمان کو گرفتار کرکے لاہور ہائیکورٹ سے نیب آفس منتقل کر دیا۔

عطاء سبحانی  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں