لاہور ہائیکورٹ نے سیاستدانوں کو قومی خزانے کے ذاتی استعمال سے روک دیا

لاہور(ادریس شیخ) لاہور ہائیکورٹ نے سیاستدانوں اور سرکاری افسران کو قومی خزانے کے ذاتی استعمال سے روک دیا، افسران اور سیاستدان اب قومی خزانے سے ایک کپ چائے بھی نہیں پی سکیں گے۔

 

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس امین الدین خان نے لائرز فاؤنڈیشن کی درخواست پر عبوری فیصلہ جاری کر دیا، عبوری فیصلے کے تحت سیاستدانوں اور افسران کو سرکاری خزانے سے چائے کا ایک کپ بھی پینے سے روک دیا گیا ہے، عدالت نے حکمرانوں اور افسران کو سرکاری خزانے کے ذاتی استعمال سے بھی روک دیا۔ درخواست پر حکم امتناعی جاری، وفاقی حکومت سمیت فریقین کو نوٹس جاری کر دیئے گئے۔

 

درخواست گزار کے جانب سے عدالت میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ سرکاری خزانہ عوام کی امانت، عوامی فلاح کیلئے ہی استعمال کیا جاسکتا ہے۔ حکمران اور افسران سرکاری خزانے کے امین ہوتے ہیں، حکمران اور افسران سرکاری خزانے کو ذاتی مقاصد کے لیے استعمال نہیں کر سکتے۔ قائداعظم نے سرکاری اجلاسوں میں چائے فراہم نہ کرنے کا حکم جاری کیا، حکمران اور افسران سرکاری پیسے کو ذاتی مقاصد کیلئے استعمال کرتے ہیں۔ عدالت سے استدعا کی گئی کہ حکمرانوں اور افسران کو سرکاری خزانے کے ذاتی استعمال سے روکنے کا حکم دیا جائے۔ کیس کی مزید سماعت 23 مئی تک ملتوی۔

عطاء سبحانی  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں