سانحہ ماڈل ٹاؤن تحقیقات سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج

اسلام آباد (پبلک نیوز) سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تحقیقات سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج، سپریم کورٹ ٹرائل کورٹ کو نواز شریف اور شہباز شریف کو ٹرائل میں شامل تفتیش کرنے کا حکم دے۔

تحریک منہاج القران کی جانب سے سپریم کورٹ میں دائر درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ ہائیکورٹ نے فیصلہ میں سانحہ ماڈل ٹاؤن واقعہ کے حقائق کو نظر انداز کیا گیا، سانحہ میں  معصوم افراد کی جانیں لی گئیں۔

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ مسلم لیگ ن کی حکومت نے ماڈل ٹاؤن سے رکاوٹیں ہٹانے کے لیے طاقت کا استعمال کیا۔ ہائیکورٹ نے فیصلہ میں سانحہ ماڈل ٹاؤن واقعہ کے حقائق کو نظر انداز کیا گیا۔ بظاہر نواز شریف، شہباز شریف، حمزہ شہباز، خواجہ سعد رفیق اور رانا ثناءاللہ سمیت فریقین سانحہ کے زمہ دار ہیں۔

درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ انصاف کے تقاضوں کے پیش نظر فریقین کو ٹرائل کا سامنا کرنے کے لیے طلب اور شامل تفتیش کرنے کا حکم دیا جائے۔

درخواست میں علامہ طاہر القادری کی حکومت مخالف پریس کانفرنس اور دس نکاتی ایجنڈہ کا بھی ذکر کیا گیا ہے۔ درخواست میں طاہر القادری کی چودھری شجاعت حسین اور چودھری پرویز الہیٰ سے ملاقات کا بھی حوالہ دیا گیا ہے۔

احمد علی کیف  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں