حکومت نے قومی اسمبلی کی کارروائی کو مفلوج کر کے رکھ دیا ہے: مریم اورنگزیب

لاہور(پبلک نیو) ترجمان مسلم لیگ ن مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ نالائق اور جھوٹی حکومت پارلیمنٹ سے بھاگ گئی کیونکہ وہ سچ کا سامنا کرنے کی جرات نہیں رکھتی۔ قومی اسمبلی کا اجلاس مؤخر کرنا آئی ایم ایف پر ہونے والے مذاکرات کو قوم سے چھپانے کی سازش ہے۔

 

حکومت کے آئی ایم ایف کے پاس جانے پر بیان دیتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ موجودہ نالائق، نااہل، چور، جھوٹی اور بد نیت حکومت چور دروازے سے آئی ایم ایف کے ساتھ معائدے پر دستخط کرنے جا رہی ہے۔ پاکستان کی عوام سے حقائق کو چھپایا جا رہا ہے۔ نالائق اور جھوٹی حکومت پارلیمنٹ سے بھاگ گئی کیونکہ وہ سچ کا سامنا کرنے کی جرات نہیں رکھتی۔

 

ترجمان مسلم لیگ ن نے کہا کہ قومی اسمبلی کا اجلاس مؤخر کرنا آئی ایم ایف پر ہونے والے مذاکرات کو قوم سے چھپانے کی سازش ہے، موجودہ حکومت کیونکہ تحریک انصاف کی ہے، جو عادی ہے چور دروازے سے فنڈنگ لینے کی۔ پارٹی کو بھی جعلی اکاؤنٹس اور منی لانڈرنگ کے ذریعے فنڈنگ اور اب چور دروازے سے آئی ایم ایف کے معائدے کو عوام سے چھپائے جا رہے ہیں، اب تک پارلیمان کو آئی ایم ایف کی شرائط کے بارے میں اعتماد میں نہیں لیا گیا۔

 

مریم اورنگزیب نے کہا کہ پاکستان کی عوام کو بتایا جائے کن شرائط پر آئی ایم کے معائدے پہ دستخط کئے جا رہے ہیں۔ قوم کو بتایا جائے ڈالر اور کتنا مہنگا ہو گا؟ قوم کو بتایا جائے روپے کی اور کتنی بے قدری ہو گی؟ قوم کو بتایا جائے بجلی، گیس اور دیگر اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں مزید کتنا اضافہ کیا جا رہا ہے؟ قومی اسمبلی کا اجلاس مؤخر کرنے کی اطلاع آئی ہے۔ عمران نیازی حکومت پارلیمان اور قوم سے حقائق چھپا رہی ہے۔

 

ترجمان مسلم لیگ ن مریم اورنگزیب نے کہا کہ حکومت قومی اسمبلی کے سامنے ٹیکس ایمنسٹی پیش کرنے کے بجائے آرڈیننس کا سہارا لینے جا رہی ہے۔ ٹیکس چوروں کو ایمنسٹی دینے کا انتظام کیا گیا ہے۔ نیشنل اسمبلی کا اجلاس منسوخ کیا جا رہا ہے کیونکہ علیمہ باجی، جہانگیر ترین اور اپنے دائیں بائیں بیٹھے چوروں کو ٹیکس ایمنسٹی دینی ہے۔ حکومت نے اسمبلی کی کارروائی کو مفلوج کر کے رکھ دیا ہے۔

 

مریم اورنگزیب نے مزید کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا کہ ایک گھنٹا سوالوں کے جواب دوں گا، آپ نے تو اسمبلی کی کارروائی ہی بند کر دی ہے، کیونکہ آپ کے پاس کسی سوال کا کوئی جواب نہیں، موجودہ حکومت کے پاس نہ کوئی معاشی ویژن، پالیسی اور سٹریٹجی ہے۔ ایوان میں عوامی مسائل پر بات نہ ہو، اسی لئے قومی اسمبلی اجلاس مؤخر کیا گیا۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں