چوہدری شوگر ملز کیس، مریم نواز کے جسمانی ریمانڈ میں 14 روز کی توسیع

 

لاہور (پبلک نیوز) احتساب عدالت نے چوہدری شوگر ملز کیس میں مریم نواز اور یوسف عباس کے جسمانی ریمانڈ میں 14 روز کی توسیع کر دی۔ مریم نواز شریف کی پیشی کے موقع پر شدید بد نظمی دھکم پیل سے احتساب عدالت کا دروازہ ٹوٹ گیا۔

 

تفصیلات کے مطابق نیب نے مسلم لیگ ن کی رہنما مریم نواز کو چودھری شوگر ملز کیس میں احتساب عدالت کے جج امیر محمد خان کی عدالت میں پیش کیا۔ کمرہ عدالت کے باہر لیگی وکلاء اور پولیس کے درمیان دھکم پیل ہوئی احتساب عدالت کا دروازہ بھی ٹوٹ گیا۔

 

نیب نے مریم نواز  کے مزید 15 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی۔ نیب پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ چودھری شوگر ملز کیس میں بیرون ملک پیسے بھیجنے کے متعلق تحقیقات کر رہے ہیں۔ چودھری شوگر ملز کے کمپنی سیکرٹری اور سی ایف او نے شیئرز منتقلی کا ریکارڈ موجود نہ ہونے کا بیان دیا ہے۔ چودھری شوگر ملز کے قائم ہونے کے دوران اس کا فنڈ 70 کروڑ روپے تھا، بعد میں 40 کروڑ مزید آنے سے متعلق نہیں بتایا گیا۔

 

مریم نواز کے وکیل کا اپنے مؤقف میں کہنا تھا کہ نیب پہلے دن سے ایک ہی نوعیت کے الزامات لگا کر بلا جواز جسمانی ریمانڈ لے رہا ہے۔ خاتون ملزمہ ہونے کی بنیاد پر مریم کے ساتھ بہتر سلوک نہیں کیا جا رہا۔ عدالت نے مریم نواز سے استفسار کیا کہ کیا آپ کی اٹینڈنٹ خاتون ہے؟ مریم نواز کا کہنا تھا کہ سب جیل میں خواتین ہی مجھے اٹینڈ کرتی ہیں۔ عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر مریم نوازاوریوسف عباس کے جسمانی ریمانڈ میں 18 ستمبر تک توسیع کر دی۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں