ن لیگ دور میں دیا گیا حج ریلیف پی ٹی آئی حکومت نے چھین لیا: مریم اورنگزیب

اسلام آباد (پبلک نیوز) پاکستان مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت نے حج اخراجات کو مسلم لیگ ن کے دور سے دوگنا کر دیا۔ حکومت نے ‏حج اخراجات میں ایک لاکھ چھپن ہزار روپے کا اضافہ کیا ہے۔ مسلم لیگ ن کے دور میں قربانی سمیت ‏سرکاری حج دو لاکھ ترانوے ہزار کا تھا۔

 

مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ پاکستان مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے حج اخراجات میں اضافہ کی مذمت کی۔ ان کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت نے حج اخراجات کو مسلم لیگ ن کے دور سے دوگنا کر دیا۔ حکومت نے ‏حج اخراجات میں ایک لاکھ چھپن ہزار روپے کا اضافہ کیا ہے۔ ‏حج 2018 میں قربانی کے بغیر حج اخراجات دو لاکھ اسی ہزار تھے۔ مسلم لیگ ن کے دور میں قربانی سمیت ‏سرکاری حج دو لاکھ ترانوے ہزار کا تھا۔ ‏نواز شریف حکومت نے ہر حاجی کو چالیس ہزار روپے کی سبسڈی دی تھی۔

 

ترجمان مسلم لیگ کا کہنا تھا کہ عمران حکومت نے صفر سبسڈی دینے کے بعد ‏سرکاری حج اخراجات چار لاکھ سینتالیس  ہزار کر دیئے ہیں۔ نواز شریف نے عوام کو سہولیات دیں لیکن پھر بھی اس پر کرپٹ ہونے کی تہمت لگائی جاتی ہے۔ مسلم لیگ ن کے دور میں حجاج کرام کو معیاری مفت کھانا فراہم کیا گیا تھا۔ پہلی بار ایسا ہوا تھا کہ مسلم لیگ ن کے دور میں سرکاری اسکیم پر جانے والے حجاج کرام کو پرائیویٹ اسکیم کے مقابلے میں زیادہ بہتر صورت دی گئی تھیں۔

 

ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن نے کم پیسوں میں زیادہ باسہولت حج کا انتظام کیا تھا۔ حرم کے قریب حجاج کرام کو رہائش گاہیں فراہم کی گئی تھی۔ اللہ تعالیٰ نے نواز شریف حکومت کو حاجیوں کی خدمت اور انہیں بہترین سہولیات کی فراہمی کی توفیق دی تھی۔ عمران حکومت کو حاجیوں کو کوئی رعایت اور سہولت دینے کی توفیق نہیں مل سکی۔ وزیراعظم نواز شریف نے اپنے دور میں حجاج کرام کے لیے سفر اور حج بیت اللہ کے لیے بہترین سہولتوں کی فراہمی کو یقینی بنایا تھا۔

 

 

انہوں نے واضح کیا کہ پہلی حکومت ہے جس نے حج پر کوئی سبسڈی نہیں دی۔ حکومت عوام کو ریلیف دینے میں مکمل ناکام ہو چکی ہے۔ حج بیت اللہ کے لیے حکومت نے پاکستان مسلم لیگ ن کے دور میں دیا گیا ریلیف بھی چھین لیا۔ عالمی سطح پر تیل کی قیمتوں میں کمی کا فائدہ حجاج کرام کو نہیں دیا گیا جو قابل افسوس ہے۔ حکومت حج سمیت عوام کی بنیادی ضرورتوں پر ٹیکس لگا کر اپنی آمدن بڑھانے کی کوشش کر رہی ہے۔ حکومت نے حج بیت اللہ کے حوالے سے متعلقہ فریقین اور پارلیمان سے مشاورت نہیں کی۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں