سعودی ولی عہد کی دورہ پاکستان کے دوران قومی قیادت سے اہم ملاقاتوں کا شیڈول تیار

پبلک نیوز: دفتر خارجہ نے ولی عہد محمدبن سلمان کی ہونے والی ملاقاتوں کی تفصیل جاری کردی۔ ولی عہد صدر مملکت، وزیراعظم اورآرمی چیف سےملاقات کریں گے۔ سعودی وفد میں شامل وزراء دو طرفہ تعاون کے فروغ کے لیے پاکستانی ہم منصبوں سے ملاقات کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم پاکستان کی دعوت پر سعودی ولی عہد محمد بن سلمان سولہ فروری کو پاکستان کےپہلے دورے پر تشریف لارہے ہیں۔ شہزادہ محمد بن سلمان کا2 روزہ دورہ تاریخی اوراسٹرٹیجک اعتبار سے انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔ دورے کو کامیاب بنانے کے لیے حکومت پوری طرح متحرک ہے۔ دفتر خارجہ نے شاہی مہمان کے دورے میں ہونے والی ملاقاتوں کی تفصیل جاری کردیں۔

شہزادہ محمد بن سلمان کے ساتھ اعلیٰ اختیارت کا حامل وفد بھی پاکستان پہنچے گا جس میں شاہی خاندان کے افراد،، وزراء اور معروف کاروباری شخصیات شامل ہیں۔ ولی عہد اسلام آباد میں قیام کے دوران صدر مملکت، وزیراعظم اور چیف آف آرمی سٹاف سےملاقات کریں گے۔ سعودی وفد میں شامل وزراء دو طرفہ تعاون کے فروغ کے لیے پاکستانی ہم منصبوں سے ملاقات کریں گے۔ نجی شعبے میں تعلقات کو بڑھانے کے لیے دونوں ممالک کے تاجر وفود بھی ملاقاتیں کریں گے۔ پارلیمانی روابط مضبوط بنانے کے لیے سینیٹ کا ایک وفد بھی سعودی ولی عہد سے ملے گا۔

دونوں ممالک کے مابین مختلف شعبوں میں معاہدوں اور مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط ہوں گے، جن میں سرمایہ کاری، فنانس، قابل تجدید توانائی، داخلی سلامتی، میڈیا، ثقافت اور کھیل شامل ہیں۔ باہمی تعاون کے فروغ کے لیے موثر میکانزم پر بھی بات ہوگی۔

سعودی کابینہ نے آئل ریفائنری سمیت پاکستان میں معاہدوں کا اختیار وزرا ءکو دے دیا۔ وزیرپٹرولیم خالد الفالح پاکستان کے ساتھ مفاہمتی یاداشتوں پر دستخط کریں گے۔ عجائب گھر اور آثار قدیمہ کے شعبوں میں دستخط کا اختیار سیاحت و قومی ورثے کے سربراہ کے سپرد کر دیا گیا۔ سعودی وزیر پیٹرولیم کا کہنا ہےدنیا بھر میں پٹرول اور گیس کی تلاش کے لیےمختلف اسکیموں کا جائزہ لے رہے ہیں۔

اس اہم دورے سےپاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات ایک مظبوط اقتصادی شراکت داری میں بدل جائیں گے۔

احمد علی کیف  6 روز پہلے

متعلقہ خبریں