وزارت مواصلات کی آمدن میں 51 فیصد کا ریکارڈ اضافہ

 

پبلک نیوز: 2018-19 میں ریونیو گزشتہ سال کے مقابلے میں 51 فیصد بڑھا۔ 43 ارب 32 کروڑ روپے اکٹھے کیے گئے۔ وفاقی وزیرمراد سعید نے کوئی ٹی اے ڈی اے نہیں لیا۔ پارلیمانی سیکرٹریز پر 48 لاکھ 52 ہزار روپے خرچ ہوئے۔ وزارت کے دفتر پر 13 لاکھ 59 ہزار روپے لگے۔

 

تفصیلات کے مطابق وزارت مواصلات کی سال 2018-19 کی کارگردگی سے متعلق رپورٹ تیار کر لی گئی۔ 2018-19 میں ریونیو گزشتہ سال کے مقابلے میں 51 فیصد بڑھا۔ 43 ارب 32 کروڑ روپے اکٹھے کیے گئے۔ 2017-18 میں ریونیو 28 ارب 64 کروڑ روپے تھا۔ آڈٹ ریکوریوں میں 7 ارب 15 لاکھ روپے وصولی۔ 2 ارب 50 کروڑ مالیت کی 448 کنال اراضی واگزار اور 3 ہزار 347 تجاوزات ہٹائی گئیں۔

 

وفاقی وزیر مراد سعید نے کوئی ٹی اے ڈی اے نہیں لیا۔ 2013 سے 2018 کے دوران پارلیمانی سیکرٹریز پر 48 لاکھ 52 ہزار روپے خرچ ہوئے۔ اس دوران صرف 8 ماہ میں اس دور کے وزیر مواصلات نے 35 لاکھ 91 ہزار خرچ کیے۔ سال 2008 سے 2013 تک وزارت کے دفتر پر 13 لاکھ 59 ہزار روپے لگے۔

رواں سال وزیرمواصلات نے گاڑیوں کے اخراجات کے لیے وزارت سے کوئی خرچ نہیں لیا۔ 2013 سے 2018 کے دوران پارلیمانی سیکرٹریز کی گاڑیوں پر 90 لاکھ خرچ ہوئے۔ اسی عرصے کے 8 ماہ میں اس وقت کے وزیر مواصلات کی گاڑیوں پر 40 لاکھ اخراجات آئے۔ سال 2008 سے 2013 تک وزیر کی گاڑیوں پر ایک کروڑ 28 لاکھ روپے خرچ ہوئے۔

 

وزارت مواصلات نے 5 ماہ میں شاہرات این 5 تین ماہ میں این 35 ،این 55 ،3 ماہ میں این 15،45،80،90 اور این 91 کو تیار کیا۔ موٹروے ایکسپریس وے اور سٹریٹجک روڈ کی تکمیل 4 ماہ میں ہوئی۔

 

اعدادوشمار کے مطابق رواں سال ای بلنگ، ای ٹینڈرنگ اور ای بڈنگ کے منصوبے مکمل کیے گئے۔ رواں سال کے دوران 7 لاکھ 57 ہزار 926 درخت لگائے گئے۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں