چیک ریپبلک کی ماڈل کو منشیات اسمگلنگ کیس میں 8 سال قید و جرمانے کی سزا

لاہور (شاکر محمود اعوان) غیر ملکی ماڈل گرل، ٹریزا کو 8 سال 8 مہنے قیدبامشقت سنا دی گئی۔ جمہوریہ  چیک کی حسینہ علامہ اقبال ائیر پورٹ پر رنگے ہاتھوں ساڑھے اٹھ کلو منشیات سمگل کرتے ہوئے گرفتار کیا تھا۔

 

چہرے پر مسکراہٹ، کالے چشمے کا تال میل اور نٹ کھٹ اداؤں کے ساتھ پیش ہونے والی غیر ملکی حسینہ ٹریزا کی قسمت کا فیصلہ آگیا۔ سیشن کورٹ نے 8 سال 8 ماہ قید اور ایک لاکھ تیرا ہزار جرمانے کی سزا سنادی۔

 

ماڈل گرل فیصلہ سنتے ہی چکرا گئی۔ آزادی کی خواہشمند چمکتی آنکھوں سے موتیوں کی برسات جاری ہونے لگی۔ اپنے وکلا کو کوستی اور میڈیا کیمروں سے چھپتی جیل روانہ ہوگئی۔

 

10 جنوری 2018 کو لاہور ائیر پورٹ سے ساڑھے اٹھ کلو منشیات بیرون ملک سمگل کرتے ہوئے گرفتار ہونے والی ٹریزا کے مقدمے کا ٹرائل ایک سال دو ماہ بعد مکمل ہوا۔ 3 مرتبہ ٹریزا کا کیس ایک عدالت سے دوسری عدالت منتقل ہوا۔ 6 گواہان کے بیانات قلمبند کیے گئے اور 3 مارچ کو چالان پیش ہوا جبکہ ایڈیشنل سیشن جج شہزاد رضا نے 20 مارچ کو فیصلہ محفوظ کیا۔

 

منشیات سمگل کرنے کے جرم میں سزا پانے والے غیر ملکی حسینہ نے سیشن کورٹ کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے ہائیکورٹ جانے کا اعلان کر دیا۔

حارث افضل  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں