مون سون، کہیں رحمت کہیں زحمت

 

پبلک نیوز: موسلادھار بارش سے نشیبی علاقے زیر آب آگئے۔ ڈیوس روڈ، لکشمی چوک و دیگر مقامات پر پانی کھڑا ہوگیا۔ چترال میں بھی شدید بارشوں کے باعث مختلف مقامات پر ندی نالوں میں طغیانی آ گئی۔ خیبر پختونخوا میں ہونے والی حالیہ مون سون بارشوں سے 2 بچوں اور ایک خاتون سمیت 5 افراد جاں بحق ہوگئے۔ محکمہ موسميات نے کراچی ميں 28 سے 30 جولائی تک گرج چمک کے ساتھ بارش کی پيش گوئی کی ہے۔

 

تفصیلات کے مطابق لاہور میں صبح سویرے موسلا دھار بارش ہوئی، نشیبی علاقے زیر آب آ گئے۔  ڈیوس روڈ، لکشمی چوک، لارنس روڈ، کوئنز روڈ پر پانی جمع ہو گیا۔۔ فیروز پور روڈ، فیض روڈ، غازی روڈ، والٹن روڈ، ڈیفنس مین بلیوارڈ، شادباغ، چوک ناخدا اور سرکلر روڈ بھی تالاب کا منظر پیش کرتے رہے۔

 

سڑکوں پر گزرنے والی ٹریفک کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ بارش شہر کے کئی علاقوں میں بجلی کے فرار ہونے کا بہانہ بھی بن گئی۔ سب سے زیادہ بارش تاجپورہ میں 54 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی۔ جیل روڈ پر 23، ایئرپورٹ پر 31 اور گلبرگ میں 24 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

 

دوسری جانب بارشوں کے باعث دریائے چناب میں پانی کی سطح بلند ہو گئی۔ چترال میں بھی شدید بارشوں کے باعث مختلف مقامات پر ندی نالوں میں طغیانی آ گئی۔ کوہ سلیمان کے پہاڑی سلسلے میں بارش سے برساتی ندی نالوں میں پانی کی سطح بلند ہونا شروع ہو گئی ہے۔

 

مون سون کی موسلادھار بارشوں نے تباہی مچا دی۔ پنجاب کے مختلف علاقوں میں بارش کے باعث چھتیں گرنے کے واقعات میں 3 افراد جاں بحق جبکہ 11 سے زائد افراد زخمی ہو گئے۔ سرگودھا کے علاقے سلانوالی میں چک نمبر 134 میں گھر کی دیوار گر گئی جس کے نتیجے میں 2 بھائی جاں بحق ہو گئے اور ایک زخمی ہوا۔ لوگوں نے اپنی مدد آپ کے تحت انہیں ملبے سے نکالا۔

 

شیخوپورہ کے مختلف علاقوں میں بھی بارش سے چھتیں گرنے کے 5 واقعات پیش آئے جس میں 10 سے زائد افراد زخمی ہوئے۔ فیصل آباد میں سمندری روڈ پر بھی گھر کی چھت گرنے سے ایک شخص زندگی ہار گیا۔ ملبے تلے دب کر 6 بکریاں بھی ہلاک ہوگئیں۔

 

خیبر پختونخوا میں ہونے والی حالیہ مون سون بارشوں سے 2 بچوں اور ایک خاتون سمیت 5 افراد جاں بحق ہوگئے۔ چترال کے مختلف علاقوں میں سیلابی صورت حال پیدا ہوگئی ہے۔ بونیر اور مانسہرہ میں ایک ایک، شانگلہ میں 2 افراد جان سے گئے۔ ایبٹ آباد میں 5 سالہ بچہ برساتی نالے میں جان کی بازی ہارگیا۔

 

محکمہ موسميات نے کراچی ميں 28 سے 30 جولائی تک گرج چمک کے ساتھ بارش کی پيش گوئی کی ہے جس کی بنا پر گرمی ميں کافی کمی ہے۔ بادلوں کے ساتھ خوبصورت موسم ميں بچے، گھوڑے اور اونٹ کی سواری بھی کرتے ہوئے نظر آئے۔

 

موسم کے حوالے سے عوام کا کہنا ہے کہ گرمی ميں ايسا موسم سی ويو کے لیے بہترين ہے۔ اور اگر بارش ہوجاتی تو مزہ اور دوبالا ہوجاتا۔ محکمہ موسميات کے مطابق زيادہ سے زيادہ درجہ حرارت 34 ڈگری سينٹئ گريڈ تک جائے گا اور ہوا ميں نمی کا تناسب 65 فيصد ہے۔

 

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں