مونس الہٰی کا پنجاب کے نئے بلدیاتی نظام پر تحفظات کا اظہار

لاہور (پبلک نیوز) مونس الہٰی کے پنجاب کے نئے بلدیاتی نظام پر تحفظات کے اظہار پر صوبائی وزیر قانون راجا بشارت اور دیگر وزرا کا ردعمل بھی آ گیا۔ صوبائی وزیرقانون راجہ بشارت کہتے ہیں بلدیاتی بل پر ق لیگ سمیت اتحادیوں سے مشاورت کی تھی، معلوم نہیں مونس الٰہی نے تحفظات کا اظہار کیوں کیا۔

 

بلدیاتی بل پر اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہٰی کے بیٹے مونس الہٰی نے تحفظات کا اظہار کر دیا۔ مونس الہٰی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا 4 ہزار یونین کونسلز، 24 ہزار ویلیج کونسلز اور پنچائیت بھی ہو گی، انتظامی اخراجات میں 6 گنا اضافہ ہو جائے گا، نئے بلدیاتی نظام میں سالانہ 8 ارب تنخواہوں کی مد میں جائیں گے۔

 

صوبائی وزیر قانون راجا بشارت اور دیگر وزرا نے ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ بل کی تیاری اور منظوری میں ق لیگ سمیت اتحادی جماعتوں سے مشاورت کی تھی۔ چوہدری مونس الہٰی نے جن تحفظات کا اظہار کیا ہے اس کو دیکھ رہے ہیں۔ ق لیگ مشاورت میں ساتھ تھی، علم نہیں کے مونس الٰہی نے تحفظات کا اظہار کیوں کیا؟

 

صوبائی وزیر جنگلات سبطین خان نیازی کا کہنا تھا کہ بلدیاتی بل عوامی مفاد میں ہے۔ لگتا ہے کہ چوہدری مونس الہٰی نے بل صحیح طرح سے سمجھا نہیں۔ بل کو پاس کروانے میں چوہدری پرویز الٰہی نے بھرپور ساتھ دیا۔ رائے رکھنے کا حق ہر ایک کو ہے۔

حارث افضل  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں