آشیانہ اقبال اسکینڈل میں شہباز شریف کے گرد گھیرا مزید تنگ

لاہور(پبلک نیوز) آشیانہ اقبال سکینڈل نئے انکشافات، سابق وزیراعلیٰ شہباز شریف کے مسلم ٹاؤن میں نجی بنک کے اکاؤنٹ نمبر میں اربوں روپے کی ٹرانزیکشنز ہوئیں، شہباز شریف تفتیش کے دوران سوالات کا جواب نہیں دے سکے، خاموش رہے۔

 

نیب لاہور کے مطابق سٹیٹ بنک کی جانب سے آگاہ کیا گیا ہے کہ شہباز شریف کے مسلم ٹاؤن میں نجی بنک کے اکاؤنٹ نمبر 10197900114603 میں اربوں روپے جمع کروائے گئے۔ حمزہ شہباز، سلمان شہباز اور دیگر فیملی ممبرز کے اکاؤنٹس میں بھی مشکوک ٹرانزیکشنز ہوئیں۔

شہباز شریف تفتیش میں ایک بار پھر خاموش ہی رہے، شہباز شریف سے سوال کیا گیا کہ 14 نومبر 2014ء کو کیوں پی ایل ڈی سی کی رپورٹ مسترد کرکے غیر معیاری رپورٹ کی منظوری دی۔ شہباز شریف سے پنجاب کے دیگر منصوبوں کی فزیبلٹی رپورٹ تھرڈ پارٹی اور کنسلٹنٹس سے بنوانے کے بارے میں باز پرس بھی کی گئی، مگر اپوزیشن لیڈر شہباز شریف ایک بار پھر خاموش رہے اور کوئی بھی جواب دینے میں ناکام رہے۔

 

نیب لاہور کے مطابق شہباز شریف کو پنجاب لینڈ ڈویلپمنٹ کمپنی کے ڈائریکٹرز، 24 اکتوبر کی میٹنگ کے شرکاء اور دیگر گواہان کے روبرو پیش کیا جائے گا۔ نیب لاہور کی انویسٹی گیشن کے مطابق ایل ڈی اے کی تیار کردہ آشیانہ اقبال پراجیکٹ کی فزیبلٹی رپورٹ کا جائزہ لیا گیا ہے اور فزیبلٹی رپورٹ تیار کرنے والی فرم شہرساز پرائیویٹ لمیٹڈ بھی تفتیش میں شامل ہو چکی ہے۔ اس سلسلے میں فزیبلٹی رپورٹ بنانے والی فرم کے ٹاؤن پلانر، فنانشل ایکسپرٹ، چیف انجنیئر شامل تفتیش ہوئے۔

 

نیب لاہور کے مطابق بسم اللہ انجنیئرنگ کو نوازنے کے لیے رہائشی پلاٹوں کی 40فیصد اور کمرشل پلاٹوں کی 100فیصد قیمت کم لگائی گئی، 9 ارب 64 کروڑ 40 لاکھ روپے کا فائدہ پیراگون کی ذیلی کمپنی بسم اللہ انجنیئرنگ کو پہنچایا گیا، شہباز شریف اور احد چیمہ نے ملی بھگت کر کے 23 ارب 53 کروڑ 40 لاکھ کی 2000 کنال اراضی کی قیمت 13ارب 80 کروڑ بتائی اور پیراگون کو نوازا۔

عطاء سبحانی  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں