نیب لاہور کی شریف فیملی کے خلاف تحقیقات میں مزید اہم پیش رفت

لاہور(شاکر اعوان) نیب لاہور نے شہباز شریف، حمزہ شہباز اور سلمان شہباز شریف سمیت دیگر کیخلاف 1 ارب 30 کروڑ کی منی لانڈرنگ کے شواہد حاصل کر لیے ہیں۔ فضل داد عباسی، قاسم قیوم اور مشتاق چینی سے تفتیش کے بعد مزید گرفتاریوں کی تیاری کرلی گئی۔

 

نیب کا شکنجہ شریف فیملی گرد مزید تنگ ہو گیا، شریف فیملی کے ملازمین نے سب کچھا چھٹا کھولنے کے لیے آمادگی کا اظہار کر دیا ہے۔ پبلک نیوز کو موصول دستاویزات کے مطابق، شہباز شریف، حمزہ شہباز اور سلمان کیخلاف ابتک کی تفتیش کے دوران 1 ارب 30 کروڑ کی رقم منی لانڈرنگ کر کے بیرون ملک بھجوائی گئی۔

 

حمزہ شہباز کیخلاف منی لانڈرنگ، آمدن سے اثاثہ جات اور بے نامی اثاثے بنانے کے شواہد مل چکے ہیں۔ نیب دستاویزات کے مطابق فنانشل مانیٹرنگ یونٹ نے 12جنوری 2018ء کو رپورٹ نیب کو بھیجی، اینٹی منی لانڈرنگ ایکٹ 2010ء کے تحت نیب نے 23 نومبر 2018 کو انکوائری کا آغاز کیا۔ فنانشل مونیٹرنگ یونٹ میں بھاری رقوم پر مشتمل مشکوک ٹرانزیکشن کا انکشاف کیا گیا اور ایسی 500 ٹرانزیکشن رپورٹ کی گئیں۔

 

جنکی مالیت 20 لاکھ سے زائد کی تھیں، 14 ٹرانزیکشن کا ریکارڈ اسٹیٹ بنک کے پاس موجود نہیں تھا، جو پاونڈز اور درہم میں ہوئیں تھیں۔ نیب لاہور کو موصول رپورٹ کے مطابق 14 مشکوک ٹرانزیکشن نراہ راست شہباز شریف، حمزہ شہباز اور سیلمان شہباز کے مابین ہوئیں۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں