گھریلو ملازمہ عظمی کے قتل کیخلاف تحریک التواء پنجاب اسمبلی میں جمع

لاہور(شعیب ہاشمی) گھریلو ملازمہ عظمی کے قتل کے خلاف تحریک التواء پنجاب اسمبلی میں جمع کرا دی گئی۔ تحریک التواء تحریک انصاف کی رکن پنجاب اسمبلی مومنہ وحید کی جانب سے جمع کرائی گئی۔

 

تحریک انصاف کی رکن پنجاب اسمبلی مومنہ وحید نے گھریلو ملازمہ عظمی کے قتل کے خلاف تحریک التواء پنجاب اسمبلی میں جمع کرا دی۔ تحریک التواء کے متن میں کہا گیا کہ 16 سالہ گھریلو ملازمہ عظمٰی کے اندھے قتل کی لرزہ خیز واردات نے سب کو ہلا کر رکھ دیا۔

 

عظمیٰ آٹھ ماہ سے علامہ اقبال ٹاؤن لاہور کے جس گھر میں کام کرتی تھی وہاں موجود تین ظالم اور بے حس خواتین نے پہلے اسے تشدد کا نشانہ بنایا، جس کے بعد اسے قتل کر کے لاش بوری میں بند کر دی۔ مقتولہ کا قصور صرف اتنا تھا کہ اس نے اپنی مالکن کی بیٹی کی پلیٹ سے کھانے کا ایک لقمہ لے لیا تھا۔

 

بچی عظمی اپنی موت سے 8 ماہ پہلے سے ان خواتین کے ظلم سہہ رہی تھی۔ اس بچی کے قتل کے ذمہ داران میں سب سے بڑا حصہ غربت کا ہے۔ آج عظمیٰ کے موت ہم سے بے شمار سوالات کر رہی ہے کہ کیا آئندہ کوئی عظمیٰ پاکستان میں پیدا ہو گی؟ واقعہ نے ہم سب کے سر شرم سے جھکا دیئے ہیں۔

عطاء سبحانی  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں