گاڑی پر حملہ کے بعد مفتی تقی عثمانی کا پہلا بیان سامنے آ گیا

کراچی (پبلک نیوز) گاڑی پر حملہ کے بعد مفتی تقی عثمانی کا پہلا بیان سامنے آ گیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ دھشت گردوں نے جب دیکھا میں بچ گیا تو پلٹ کر دوبارہ حملہ کیا۔ ڈرائیو کے زخمی ہونے پہ میں نے کہا کہ میں گاڑی چلاتا ہوں۔

گاڑی پر کیسے  حملہ ہوا؟ مولانا مفتی تقی عثمانی کا بیان سامنے آ گیا۔ اپنے بیان میں انھوں نے کہا کہ دہشت گردوں نے جب دیکھا میں بچ گیا تو پلٹ کر دوبارہ حملہ کیا۔ ڈرائیو کے زخمی ہونے پہ میں نے کہا کہ میں گاڑی چلاتا ہوں۔ ڈرائیور نے منع کیا کہ تیسرا حملہ ہوسکتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ گاڑی میں میرے ہمراہ میری فیملی بھی تھی۔ اللہ کے کرم سے مجھے خراش تک نہ آئی۔ ایک گارڈ جو پولیس کی طرف سے ملا ہوا ہے وہ اگلی سیٹ پر تھا۔ ڈرائیور گاڑی چلا رہا تھا۔ دائیں سے بائیں ایسا لگا گولیوں کی بوچھاڑ ہوگئی ہو۔ سامنے سے دائیں سے بائیں فائرنگ کی بارش ہوئی۔

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں