چیئرمین نیب کو بدنام کرنیوالے ملزمان کیخلاف ریفرنس دائر

لاہور (شاکر محمود اعوان) قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال کے خلاف مبینہ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل کرنے والے ملزمان کے خلاف نیب نے ریفرینس احتساب عدالت میں فائل کر دیا ہے۔ اس کے علاوہ بھی چالاک اور عیار ملزمان نے متعدد سادہ لوح شہریوں کو لوٹا۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین نیب کو بلیک میل کرنے والے گروہ کے خلاف ریفرنس احتساب عدالت میں دائر کر دیا گیا۔ ریفرنس میں طیبہ گل عرف پنکی اور فاروق نول کو مرکزی ملزم نامزد کیا گیا ہے۔

جس میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ انہوں نے سادہ لوح شہریوں کو جعل سازی کے زریعے کڑوڑوں روپے ہتھائیے۔ ریفرینس میں کہا گیا ہے کہ ملزمان کو 15 جنوری 2019 کو گرفتار کیا۔ ملزمان کے خلاف صفدر، حسین ساجد، صبا حامد، نیاز احمد خان، محمد آصف، محمد زاہد اقبال اور شاہین خان نے نیب لاہور سے رجوع کیا۔

ملزمہ طیبہ گل اور فاروق نول کے خلاف 6 افراد نے نیب سے رجوع کیا۔ نیب ریفرینس کے مطابق چالاک اور عیار ملزمان نے سادہ لوح شہریوں سے 2 کروڑ 44 لاکھ 50 ہزار، کا فراڈ کیا۔

ملزمان کے خلاف 36 گواہان نے نیب کے روبرو اپنے بیانات قلمبند کروائے ہیں جبکہ نیب کی جانب سے میں ملزمان کو منتقل ہونے والی رقوم، بنک ریکارڈ اور دیگر تحریری دستاویزات کا حصہ بنایا گیا ہے۔ طیبہ گل اور فاروق نول کے خلاف ریفرینس 630 صفحات پر مشتمل ہے ایڈمین جج جواد الحسن نے ملزمان سمیت تفتیشی افسر کو 17 جون کےلیے نوسسز جاری کر دیئے ہیں۔

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں