نیب ڈاکٹر وی سی لاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی عظمیٰ قریشی کیخلاف الزامات ثابت کرنے میں ناکام

لاہور(شاکراعوان) احتساب بیورو (نیب لاہور) نے لاہور کالج فار ویمن کی وائس چانسلر ڈاکٹرعظمیٰ قریشی کے خلاف تحقیقات مکمل کر لیں۔ وائس چانسلر پر الزامات ثابت نہ ہونے پر انکوائری بند کرنے کی سفارش، رپورٹ چیئرمین نیب کو بھجوا دی گئی۔

 

لاہور کالج فار ویمن کی وائس چانسلر ڈاکٹر عظمٰی قریشی کیخلاف انکوائری میں نیب لاہور ایک بھی الزام ثابت کرنے میں ناکام ہو گئی۔ نیب کے تفتیشی افسر ریحان اکرم نے نےڈاکٹر عظمی قریشی کیخلاف انکوائری بند کرنے کی سفارش کر دی۔ نیب نے ریجنل بورڈ میٹنگ میں انکوائری بند کرنے کی حتمی منظوری کے لیے فائل چیئرمین نیب جسٹس ر جاوید اقبال کو بھجوا دی۔ ڈاکٹر عظمی قریشی کی تعیناتی پر سابق وفاقی وزیر احسن اقبال کی سفارش کا الزام تھا اور اس ضمن سابق چیف جسٹس ثاقب نثار نے وائس چانسلر لاہور ویمن یونیورسٹی کیخلاف تحقیقات کا حکم دیا تھا۔

 

سابق چیف جسٹس نے ڈاکٹر عظمیٰ قریشی کو عہدے سے فارغ کرنے کے احکامات جاری کیے تھے۔ ڈاکٹر عظمی پر الزام تھا کہ انہوں نے اختیارات سے تجاوز کیا، ڈاکٹر عظمی نے فکیلٹی کو 100 لیٹر پیٹرول اور 1 ہزار ٹیلی فون کی مد میں دینے کی منظوری دی اور من پسند افراد کو یونیورسٹی کے ٹھیکے دیئے اور کنٹریکٹ ملازمین کے مدت مین غیر قانونی طور پر اضافہ کیا، نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر عظمی کیخلاف شکایت گزار کو بھی شواہد نیب کو پیش نہیں کر سکا، جس کے باعث انکوائری بند کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں