شریف فیملی کی مشکلات میں اضافہ، نصرت شہباز 17 اپریل کو نیب میں طلب

لاہور(شاکر اعوان) آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں شریف فیملی کے لیے ایک اور بری خبر آ گئی۔ نیب لاہور نے نصرت شہباز کو 17 اپریل کو طلب کر لیا۔ چیئرمین نیب نے نصرت شہباز کے خلاف تحقیقات کی منظوری دے دی ہے۔

 

شریف فیملی کے گرد نیب کی تحقیقات کا دائرہ کار وسیع ہو گیا، ذرائع کے مطابق احتساب بیورو(نیب لاہور) نے شہباز شریف کی صاحبزادیوں کو آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں طلب کر لیا، 18 اپریل کو رابعہ شریف جبکہ 19 اپریل کو جویریہ شریف کو نیب میں پیش ہونے کا حکم دیا گیا۔ آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں چیئرمین نیب نے شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز شریف کے خلاف باقاعدہ انوسٹی گیشن کی منظوری دے دی، جس کے بعد نیب لاہور نے نصرت شہباز کو 17 اپریل کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا۔

ذرائع کے مطابق شہباز شریف نے اپنی اہلیہ نصرت شہباز کو کروڑوں روپے مالیت کے اثاثے تحفے میں دئیے، شہباز شریف نے اپنی اہلیہ کو 5 کروڑ 57 لاکھ 72 ہزار کی رقم تحفے میں دی ہے، ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ شہباز شریف کی جانب سے یہ رقم 2013 سے 2018 کے درمیان مختلف ٹرانزیکشن کے زریعے منتقل کی گئی، نصرت شہباز 12 کمپنیوں میں 69 لاکھ 56 ہزار 500 شئیرز کی مالک ہیں، 96 ایچ ماڈل ٹاون اور مری کی رہائش نصرت شہباز کے نام ہیں اور نصرت شہباز کے نام قصور اور فیروز والا میں 810 کنال قیمتی زمین ہے۔

 

نیب کی جانب سے نصرت شہباز کی طلبی پر ان معاملات سے متعلق سوالات کئے جائیں گے۔ ذرائع کے مطابق حمزہ شہباز کو آئندہ ہفتہ دو دن کیلئے تحقیقات کیلئے طلب کیا ۔ حمزہ شہباز شریف کو نیب نے 16 اپریل کو آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس جبکہ 15 اپریل کو حمزہ شہبازشریف کو چنیوٹ ملز کیس میں مزید ثبوت آنے پر طلب کیا گیا۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں