نیب لاہور نے حسین، حسن نواز کی گرفتاری کی سفارش چیئرمین نیب کو بھجوا دی

لاہور(شاکر اعوان) نواز شریف فیملی کے لیے ایک اور بری خبر، نیب لاہور نے حسین نواز اور حسن نواز کی گرفتاری کی سفارش چیئرمین نیب کو بھجوا دی۔ حسن نواز اور حسین نواز کا چوہدری شوگر مل میں مشکوک کردار سامنے آیا ہے جس کی وضاحت کے لیے تفتیش درکار ہے۔

 

نیب نے شریف فیملی کیخلاف مزید گھیرا تنگ کر لیا، نیب کی ریجنل بورڈ میٹنگ ہوئی، تفتشی افسر نے مؤقف اختیار کیا کہ چوہدری شوگر مل میں غیر ملکی انوسٹمنٹ، قرضہ جات اور تحائف سے متعلق نیب نے تمام شواہد حاصل کر لیے ہیں، اب تفتیش کو آگے بڑھانے کے لیے حسن اور حسین نواز سے تفتیش درکار ہے جبکہ دونوں کو متعدد کال اپ نوٹسز بھیجے گیے لیکن وہ پیش نہیں ہوئے۔ تفتیشی افسر نے ڈی جی نیب سلیم شہزاد کو سفارش کی کہ حسن اور حسین کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے جائیں، تاکہ کاروائی کو مزید آگے بڑھایا جائے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ چوہدری شوگر مل کو جو 40 کروڑ آف شور کمپنیوں سے منتقل ہوئے اس میں حسن اور حیسن نواز ملوث ہیں، حسن اور حسین نواز چوہدری شوگر مل کے شئیر ہولڈر رہے ہیں، جبکہ حسن نواز نے نواز شریف کو 1 ارب 16 کروڑ سے زائد کی رقم کے تحائف کے طور پر دئیے۔ حسن اور حسین نواز کے وارنٹ گرفتاری کے لیے چیئرمین نیب کو سفارش بھیجی جائے گی اور وارںت جاری ہونے کے بعد احتساب عدالت لاہور سے دونوں ملزموں کو اشتہاری قرار دلوانے کےلیے رجوع کیا جائے گا۔

عطاء سبحانی  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں