چودھری شوگر ملز منی لانڈرنگ کیس، نیب نے 25 سال کا ریکارڈ حاصل کر لیا

 

لاہور (پبلک نیوز) شریف فیملی نے چوہدری شوگر مل سے کیا پایا کیا کھویا نیب نے چودھری شوگر مل کے شئیرز، منافع اور قرض کا 25 سالہ ریکارڈ حاصل کر لیا ہے۔ مریم نواز، یوسف عباس سمیت ملوث افراد کے خلاف مزید شواہد اکھٹے کر لیے گئے ہیں۔

 

تفصیلات کے مطابق نیب لاہور نے چودھری شوگر مل اور منی لانڈرنگ میں گرفتار مریم نواز، یوسف عباس سمیت ملوث افراد کے خلاف مزید شواہد اکھٹے کر لیے۔ نیب ذرائع کا کہنا تھا کہ چودھری شوگر مل کے شئیرز، منافع اور قرض کا 25 سالہ ریکارڈ حاصل کر لیا گیا۔

 

 

پبلک نیوز کو موصول دستاویزات کے مطابق چودھری شوگر ملز نے 1991، 92 میں 74 کروڑ قرض حاصل کیا اور منافع کچھ نہیں ہوا۔ 1993 میں قرض  1 راب 9 کروڑ 34 لاکھ، شئیرز 79 لاکھ 60 ہزار جبکہ خسارہ 13 کروڑ 60 لاکھ تھا۔ 1994 میں قرض 1 ارب 20 کروڑ 85 لاکھ، شئیرز 1 کروڑ 48 لاکھ 30 ہزار جبکہ خسارہ 2 کروڑ 28 لاکھ 10 ہزار تھا۔

 

1995 میں 1 ارب 13 کروڑ 57 لاکھ، شئیرز 12 کروڑ 30 لاکھ جبکہ  فائدہ 15 کروڑ 94 لاکھ 80 ہزار تھا۔ 1997، 98 میں شوگر ملز 5 کروڑ 98 لاکھ خسارے میں تھی جبکہ قرض 1رب 26 کروڑ 35 لاکھ تک پہنچ گیا۔ 1999 سے 2003 تک شوگر مل کے مالی معاملات میں بہتری آئی اور شئیرز 37 کروڑ 96 لاکھ 62 ہزار تک پہنچ گئے۔

 

2004 میں شئیرز کی تعداد میں کمی ہوئی اور 2 کروڑ 52 لاکھ کا خسارہ ہوا۔ 2006 سے 2009 میں شوگر مل مسلسل خسارے میں رہی لیکن شئیرز بڑھتے بڑھتے 65 کروڑ 4 لاکھ تک پہنچ گئی۔ 2010 سے 2013 تک شوگر مل مالی فائدے میں رہی لیکن قرض حیران کن اضافہ ہوا۔ شئیرز کی تعداد 92 کروڑ 50 لاکھ جبکہ قرض 2 ارب 24 کروڑ 59 لاکھ جبکہ مل کو 9 کروڑ کا فائدہ دکھایا گیا۔2014 اور 2015 میں شوگر مل نے ریکارڈ قرض لیا جبکہ خسارہ 37 کروڑ 5 لاکھ 50 ہزار جبکہ 20 کروڑ 30 لاکھ رہ گئے۔

 

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں