نادرا افسران کی جانب سے وزیر اعظم آفس کی اجازت کے بغیر بیرون ملک سفر

اسلام آباد (پبلک نیوز) الیکشن نتائج ہوں یا انتظامی امور وزیر اعظم کی کفایت شعاری پالیسی کو نادرا کی جانب سے ہر جگہ نظر انداز کیا جارہا ہے۔ اس کی تازہ مثال نادرا کے افسران کی جانب سے وزیر اعظم آفس کی اجازت کے بغیر پرتعیش غیر ملکی دورے ہیں جن میں ہوائی جہاز کی بزنس کلاس کے ٹکٹ لیے گئے اور بوجھ قومی خزانے پر پڑا۔

جاری کردہ نوٹیفیکیشن کے مطابق سرکاری ملازمین میں سے بزنس کلاس کی سہولت صرف گریڈ 22 کے افسران، اور سفیروں کو حاصل ہے اور سفر کے لیے تمام سرکاری ملازمین کو وزیر اعظم ہاوس سے پیشگی اجازت بھی درکار ہوگی۔ 24 اکتوبر کو یہ نوٹیفیکیشن وزارت داخلہ کی جانب سے تمام ماتحت اداروں کو جاری کیا گیا جن میں نادرا بھی شامل ہے۔

لیکن نادرا حکام نے اس نوٹیفیکیشن پر عمل ضروری نہیں سمجھا اور وزیراعظم ہاوس کی منظوری کے بغیر 4 افسران پر مشتمل پہلا گروپ 28 اکتوبر کو امارات ائیرلائن کی پرواز سے اسلام آباد تا سوڈان براستہ دبئی روانہ ہوا۔ اس وفد میں ڈی جی پراجیکٹ ذوالفقار علی، ڈائریکٹر ٹریننگ اینڈ ڈویلپمنٹ  عثمان جاوید، ڈائریکٹر مرزا فیصل اور ڈپٹی ڈائریکٹر عاشر احمد شامل تھے۔

اس سفر کے لیے ایک تو اجازت نہیں لی گئی اور سفر بزنس کلاس میں کیا گیا جس کی گریڈ 22 کے افسران سے نیچے کسی افسر کو اجازت نہیں۔ درسرا گروپ نے 27 اکتوبر کو نائجیریا کے لیے اڑان بڑھی، اس گروپ میں ڈپٹی ڈائریکٹر پراجیکٹ زوہیب امین، ڈپٹی ڈائریکٹر عثمان چیمہ، ڈپٹی ڈائریکٹر اسامہ منیر اور ڈپٹی ڈائریکٹر فہد اسحاق  شامل تھے۔ اس پرواز کے لیے بھی پیشگی اجازت نہیں لی گئی۔

حارث افضل  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں