نوازشریف علاج کے لیے لندن چلے گئے

لاہور (پبلک نیوز) نوازشریف علاج کے لیے لندن چلے گئے۔ شہبازشریف، ڈاکٹر عدنان اور دو ذاتی ملازم بھی نوازشریف کے ہمراہ تھے۔ مریم نواز اور والدہ نے گھر سے ہی خدا حافظ کہا، پارٹی قیادت ایئرپورٹ پر چھوڑنے آئی۔ ایئرایمبولنس پاکستان وقت کے مطابق قریب ساڑھے گیارہ بجے ہیتھرو ایئرپورٹ پر لینڈ کرے گی۔

 

سابق وزیراعظم نوازشریف قطر ائیرویز کی جدید ترین سہولیات سے آراستہ ایئر ایمبولینس میں علاج کے لیے لندن چلے گئے۔ نوازشریف  قافلے کے ہمراہ جاتی امرا سے ایئرپورٹ پہنچے۔ مریم نواز اپنے والد کو رخصت کرنے ائیرپورٹ نہیں گئیں۔ دادی کے ہمراہ نوازشریف کو گھر سے ہی الواداع کیا۔ کارکنوں کی بڑی تعداد ایئرپورٹ کے حج ٹرمینل کے باہر موجود تھی۔ نعرے بازی ہوئی، پھول نچھاور کیے گئے۔

 

نوازشریف خود گاڑی سے اترے، چل کر طیارے میں سوار ہوئے۔ بھائی شہبازشریف، ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان اور دو ذاتی ملازم بھی ہمراہ تھے۔

 

ایئر ایمبولینس کے ڈاکٹر نے نواز شریف کا طبی معائنہ کیا۔ چیک اپ کے وقت نواز شریف کے پلیٹیلیٹس کی تعداد 40 ہزار تھی۔ ایئرایمبولینس نے قریب ساڑھے دس بجے لندن کے لیے اڑؑان بھری۔

 

ایئرایمبولینس پاکستانی وقت کے مطابق تقریباً 2 بجکر 42 منٹ پر دوحہ پہنچی۔ ری فیولنگ ہوئی، طبی اور فضائی عملے کی تبدیلی کے بعد لندن روانہ ہوئی۔

 

نوازشریف ابتدائی طور پر اپنے صاحبزاے حسن نواز کی رہائشگاہ پر قیام کریں گے، شہباز شریف بھی بھائی کی صحت یابی تک ان کے ساتھ ہی رہیں گے۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں