نوازشریف کو بیرون ملک علاج کرانے کی مشروط اجازت مل گئی

اسلام آباد (پبلک نیوز) حکومت نے نوازشریف کو بیرون ملک علاج کرانے کی مشروط اجازت دے دی۔ نواز شریف سات ارب روپے کے سکیورٹی بانڈز جمع کرائیں اور چار ہفتے کے لیے باہر جائیں۔ وفاقی وزیر فروغ نسیم نے کہا اس دوران طبیعت بہتر نہ ہوئی تو بیرون ملک قیام کا دورانیہ بڑھ سکتا ہے۔

 

حکومت نواز شریف کو ایک بار کے لیے یہ اجازت دے رہی ہے کہ وہ بیرون ملک جائیں اور علاج کرائیں۔ بیرون ملک روانگی اس بات سے مشروط ہے کہ نواز شریف یا شہباز شریف 7 یا ساڑھے 7 ارب روپے کے ضمانتی بانڈ جمع کرادیتے ہیں تو وہ باہر جاسکتے ہیں اور اس کا دورانیہ 4 ہفتے ہوگا جو قابل توسیع ہے۔

 

وفاقی وزیر فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ میڈیکل رپورٹس دیکھنے کے بعد ہمیں اندازہ ہوا کہ نواز شریف کی صحت کو سنگین مسائل لاحق ہیں، ہمیں اندازہ نہیں تھا کہ معاملہ اتنا گمبھیر ہے۔

 

ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ اجازت صرف ایک بار کے لیے ہوگی اور انہیں انڈیمنٹی بانڈ جمع کرانا ہوگا۔ ایک سزا یافتہ شخص کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا معاملہ مختلف ہوتا ہے۔ اب یہ مسلم لیگ ن پر منحصر ہے کہ وہ اس معاملے کو کیسے آگے لے کر چل سکتے ہیں۔

 

حکومت نے ضمانتی بانڈ نہیں مانگے بلکہ انڈیمنٹی بانڈ مانگ رہے ہیں۔ اگر نواز شریف کی طبیعت ٹھیک ہوجاتی ہے اور وہ چار ہفتوں میں واپس نہیں آتے تب انڈیمنٹی بانڈ نافذ العمل ہوگا اور اگر ان کی طبیعت بہتر نہیں ہوتی تو انڈیمنٹی بانڈ اس طرح نافذ العمل نہیں ہوگا۔

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں