آئین توڑنے والے کمر درد کے بہانے سے آج بھی ملک سے باہر ہے: نواز شریف

لاہور (پبلک نیوز) سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ آج جو معاشی صورتحال ہے اگر ایسی رہا تو دس سال بعد پاکستان کے قرضے ہماری آمدن سے زیادہ ہو جائیں گے۔ ہمیشہ ملک کی بھلائی کے لیے کام کیا ہے۔


قیدی نمبر 4470 سابق وزیراعظم نواز شریف کی کارکنان سے ملاقات کی اندرونی کہانی منظر عام پر آ گئی۔ کارکنان نے نواز شریف سے ان کی طبعیت پوچھی اور اس پر نواز شریف نے اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے الحمداللہ کہا۔ نواز شریف نے کارکنان اور پارٹی رہنماؤں سے بھی ان کی خیریت دریافت کی۔

 

ملاقات میں نواز شریف نے ملکی معاشی صورتحال اور موجودہ حکومت کی پالیسیوں پر تشویش کا اظہار کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمارے دور میں روپے کی قدر میں اضافہ ہوا۔ بیرونی سرمایہ کار ہمارے دور میں پاکستان میں انویسٹمنٹ کرنے لگے تھے۔ ہمارے دور میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں کم ہوئی۔ ملک ترقی کے راستوں پر چلنے لگا تھا۔ ملک دشمن عناصر کو ملک کی ترقی برداشت نہ ہوئی۔ مسلم لیگ ن عوام کی عدالت میں آج بھی سرخرو ہے۔

 

ان کا کہنا تھا تھا مسلم لیگ ن عدالتی کیسز اور جیلوں سے نہیں ڈرتی۔ آئین توڑنے والے کمر درد کے بہانے سے آج بھی ملک سے باہر ہے۔ آج جو معاشی صورتحال ہے اگر ایسی رہا تو دس سال بعد پاکستان کے قرضے ہماری آمدن سے زیادہ ہو جائیں گے۔ ہمیشہ ملک کی بھلائی کے لیے کام کیا ہے۔

 

سردار ایاز صادق اور شاہد خاقان عباسی نے قومی اسمبلی کے اجلاسوں کی کارروائیوں سے نواز شریف کو آگاہ بھی کیا۔ نواز شریف نے احسن اقبال سے سی پیک کے منصوبوں کے متعلق بھی پوچھا۔

 

نواز شریف نے کارکنان کو غالب کا شعر بھی سنایا:

 

زندگی اپنی جب اس شکل سے گزری غالبؔ

ہم بھی کیا یاد کریں گے کہ خدا رکھتے تھے

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں