حکومت سے مایوس ن لیگ نے عدالت کا دروازہ کھٹکھٹا دیا

اسلام آباد (پبلک نیوز) حکومت سے مایوس ن لیگ نے عدالت کا دروازہ کھٹکھٹا دیا۔ لاہور ہائیکورٹ نے شہبازشریف کی درخواست کی فوری سماعت کی۔ استدعا کی گئی کہ نوازشریف کا نام غیرمشروط طور پر ای سی ایل سے نکالا جائے۔ ہائیکورٹ نے وفاق اور نیب سے جواب طلب کر لیا۔

 

تفصیلات کے مطابق نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی مشروط اجازت کے خلاف شہبازشریف نے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی۔ درخواست فوراً ہی سماعت کے لیے مقرر کی گئی، جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے سماعت کی۔

 

شہبازشریف کے وکیل امجد پرویز نے دلائل دیئے کہ نواز شریف کے میڈیکل ٹیسٹ کرانے ہیں جن کی سہولت پاکستان میں میسر نہیں،سرکاری میڈیکل بورڈ نے بھی علاج کے لیے بیرون ملک جانے کا مشورہ دیا۔ لیکن وفاقی کابینہ نے نام ای سی ایل سے نکالنے کے لیے مشروط اجازت دی۔

 

امجد پرویز کا مؤقف تھا کہ کہ ہائیکورٹ نے ضمانت منظور کرتے ہوئے نام ای سی ایل سے نکالنے پر کوئی قدغن نہیں لگائی۔ عدالت سے اپیل ہے کہ نواز شریف کا نام غیر مشروط طور پر نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم دیا جائے۔

 

وفاقی حکومت کے وکیل نے درخواست ناقابل سماعت قرار دی، موقف اپنایا کہ وفاقی حکومت نے نام ای سی ایل میں ڈالا لہذا اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کیا جائے۔

 

عدالت نے استفسار کیا کہ یہ بتائیں کہ کس قانون کے تحت حکم جاری کیا گیا؟ ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا جب کوئی ملزم پیش نہ ہو تو وفاق کو کہا جاتا ہے ملزم کیوں نہیں آیا۔۔ مشرف کیس میں بھی ایسا ہی ہوا۔

 

شہبازشریف کے وکیل بولے اسلام آباد ہائی کورٹ نے سزائیں معطل کر کے ضمانت دی، عدالتی حکم کے بعد حکومت کوئی شرط عائد نہیں کر سکتی۔ عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد وفاقی حکومت اور نیب سے جواب طلب کرتے ہوئے سماعت کل دوپہر دو بجے تک ملتوی کردی۔

احمد علی کیف  3 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں