دبئی میں پاکستان، آئی ایم ایف کے درمیان مالیاتی پیکج کیلئے مذاکرات جاری

اسلام آباد(پبلک نیوز) مالیاتی پیکیج پر پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات دبئی میں جاری، 230 ارب روپے کے نئے ٹیکس عائد ہونے کا امکان ہے۔ حکومت ریونیو شارٹ فال پر قابو پانے کیلئے آئی ایم ایف کو یقین دہانی کرائے گی۔

 

پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مالیاتی پیکج کے لئے مذاکرات دبئی میں جاری ہیں، پاکستانی وفد کی قیادت وزیر خزانہ اسد عمر اور آئی ایم ایف کی سربراہ کرسٹین لوگارڈ اپنے وفد کی سربراہی کر رہی ہیں، وزیر خزانہ نے رواں مالی سال کے پہلے سات ماہ کے اقتصادی اعدادوشمار سے متعلق آئی ایم ایف کو بریفنگ دی۔ وزیر خزانہ اسد عمر مالیاتی خسارہ محدود کرنے، ٹیکس آمدن بڑھانے کیلئے تگ و دو اور معاشی اصلاحات کے روڈ میپ کے بارے میں آگاہ کریں گے۔

 

مذاکرات میں 230 ارب روپے کے نئے ٹیکسوں پر معاہدے کا امکان ہے۔ ذرائع کے مطابق بجلی، گیس اور پیٹرولیم مصنوعات میں اضافے پر آئی ایم ایف سے کوئی معاہدہ نہیں کیا جائے گا۔ آئی ایم ایف حکام کا ٹیکس وصولیوں میں کمی اور ریونیو شارٹ میں اضافے پر تحفظات دور کئے جائیں گے۔ حکومت ریونیو شارٹ فال پر قابو پانے کیلئے آئی ایم ایف کو یقین دہانی کرائے گی۔

عطاء سبحانی  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں