سیاسی مارچ ہے تو سیاسی طریقے سے نمٹیں گے، وزیراعظم کا موقف

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیراعظم موجودہ صورتحال سے نمٹنے کے لیے پرعزم ہیں، سیاسی مارچ کو سیاسی طریقے سے نمٹنے کے لیے کمر کس لی۔ ترجمانوں کو گائیڈ لائن جاری کر دیں۔ ان کا کہنا ہے کہ دلائل اور عقل و فہم سے آزادی مارچ والوں کو ایکسپوز کریں۔ تحمل مزاجی سے حکومتی بیانیے کا دفاع کریں۔

 

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت پارٹی ترجمانوں کا اجلاس ہوا۔ آزادی مارچ پر مشاورت ہوئی، وزیراعظم کا کہنا تھا کہ سیاسی مارچ ہے تو سیاسی طریقے سے نمٹیں گے۔ وزیراعظم نے صورتحال کے پیش نظر ترجمانوں کو نئی گائیڈ لائنز روک دیا، کہا کوئی ترجمان آزادی مارچ تک اسلام آباد سے باہر نہیں جائے۔

 

وزیراعظم کا کہنا تھا آزادی مارچ کا مقابلہ پارٹی بیانیہ سے کیا جائے۔ میڈیا میں آزادی مارچ والوں کو دلائل اور عقل و فہم سے ایکسپوز کریں، حکومتی بیانیے کا تحمل مزاجی سے دفاع کریں۔ ٹی وی ٹاک شوز یا تقاریب میں گالم گلوچ سے اجتناب برتا جائے، ٹاک شوز میں حکومت کارکردگی سامنے لائیں۔ ساتھ ہی آزادی مارچ کے پیچھے چھپے حقائق کو بھی سامنے لائیں۔

 

وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ ملک معاشی خوشحالی کی جانب بڑھ رہا ہے اور کچھ عناصر ملکی ترقی کے سفر میں رکاوٹیں ڈالنے پر تلے ہیں۔ وزیر اعظم عمران خان نے وزراء کے بعد ترجمانوں کو بھی نوازشریف کی صحت پر بات کرنے سے منع کردیا۔ ہدایت جاری کی کہ نوازشریف کی صحت پر کوئی غیرسنجیدہ بات نہ کی جائے۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں