ایف آئی اے کو منی لانڈرنگ کیس میں ایک اور وفاقی وزیر کیخلاف ثبوت مل گئے

کراچی (پبلک نیوز) وفاقی تحقیقات ادارہ (ایف آئی اے) کو متحدہ پاکستان (ایم کیو ایم) منی لانڈرنگ کیس میں ثبوت مل گئے ہیں۔ جس پر ایم کیو ایم اور پاک سرزمین پارٹی (پی ایس پی) کے متعدد رہنماؤں کو طلب کر لیا گیا۔

طلب کردہ  رہنماوں میں وفاقی وزیر قانون بیرسٹر فورغ نسیم بھی شامل ہیں۔ ایف آئی اے نے وزیر قانون پندرہ نومبر کو طلب کیا ہے۔ جس میں فروغ نسیم سے خدمت خلق فاؤنڈیشن کو عطیہ کی گئی رقم پر وضاحت مانگی جائے گی۔

ایف آئی اے حکام کا کہنا ہے کہ ایک ارب روپے کی رقم صرف پرچیوں پر جعلی نام لکھ کر جمع کرائی گئی۔ شبہ ہے جعلی انٹریوں والی رقوم بھتہ لے کر جمع کرائی گئیں۔

واضح رہے کہ اس سے قبل ہمیں یہ مثال ملتی ہے کہ جب وزیر اعظم کے مشیر بابر اعوان کے خلاف انکوائری شروع کی گئی تو انہوں نے استعفیٰ دے کے انکوائری کا سامنا کرنے کا اعلان کیا اور عمل بھی کیا۔ اس حوالے سے اگر سینیٹر اعظم سواتی اور بیرسٹر فروغ نسیم بھی یہی روایت اپنائیں تو خوش آئند مثال قائم ہوجائے گی۔

احمد علی کیف  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں