تیل اور گیس کی تلاش، سمندر میں ڈرلنگ کا کام مکمل

کراچی (پبلک نیوز) کراچی کے ساحل سے 230 کلو میٹر دور گہرے سمندر میں تیل و گیس کی ڈریلنگ کا کام مکمل ہوگیا جو کہ گزشتہ 4 ماہ سے جارے تھا۔ گہرے سمندر میں 5450 میٹر گہرائی پر ہائیڈور کاربن کی موجودگی سامنے آئی ہے۔

 

تفصیلات کے مطابق کراچی کے ساحل سے 230 کلو میٹر دور گہرے سمندر میں تیل و گیس کی ڈریلنگ کا کام مکمل ہوگیا جو کہ گزشتہ 4 ماہ سے جارے تھا۔ ذرائع کے مطابق گہرے سمندر میں 5450 میٹر گہرائی پر ہائیڈور کاربن کی موجودگی سامنے آئی ہے۔ ہائیدو کاربن ملنے کا مقصد آئل اور گیس کے زخائر ہوتا ہے۔

 

ذرائع کے مطابق ہائیدو کاربن کی سمپلنگ لے کر ٹیسٹنگ کے عمل کے لیے بھیج دیا گیا۔ ٹیسٹنگ کی رپورٹ سے پتا چلے گا کہ تیل اور گیس کے ذخائر کتنے ہیں۔

 

واضح رہے کہ پاکستان نے گذشتہ سال 2018 میں 17 ارب ڈالر کی پیٹرولیم مصنوعات درآمد کی تھی۔ کیکرا ون سے تیل و گیس کے ذخائر ملنے پر پیٹرولیم مصنوعات کی درآمدی بل میں نمایاں کمی ہوگی۔

حارث افضل  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں