ڈاکٹروں کی غفلت، غلط انجیکشن نے ننھی نشوا کو معذور بنا دیا

کراچی (پبلک نیوز) کسے وکیل کریں کس سے منصفی چاہیں، منصف ہو تو کب انصاف کرو گے، معاشرے کے مردہ ڈھیر پر ہر باپ کی راج دلاری نشوا تکلیف میں ہے، طاقت کے نشے میں چور ایس پی طاہر نورانی کی نشوا کے والد کی دھمکیاں، فوٹیج بھی منظر عام پر آ گئی، معاملہ سامنے آنے پر سندھ پولیس حکام کو بھی ہوش آ گیا، طاہرنورانی کو عہدے سے ہٹا کر تحقیقات شروع کردیں۔

 

تفصیلات کے مطابق اسپتال جنجال ہیں جہاںزندگی نہیں موت بٹتی ہے۔ تو تھانے ناسور بن چکے ہیں۔ بدترین حیوانیت۔ انسانیت بھی شرمسار ہو جائے۔ جہاں ہر روز عام آدمی کے خوابوں کی موت ہوتی ہے۔

 

ایک طرف دل کا ٹکڑے کا غم، تو دوسری جانب قانون کے رکھوالوں نے قانون کو مذاق بنا لیا، بجائے زخموں پر مرحم رکھنے کے قانون کی دھجیاں اڑا دیں۔ کب آئے گی تبدیلی؟ عوام عدالت نہیں لگا سکتے، انہیں انصاف کے لیے دھکے کھانا پڑتے ہیں۔ دوسری جانب، جن کا کام انصاف دینا ہے وہ قانون کو دھوکا د رہے ہیں۔

 

کراچی کے اسپتال میں غلط انجیکشن نے ننھی نشوا کو معذور بنا دیا، والدین کے لیے یہ غم تازہ تھا کہ اوپر سے ایس پی گلشن اقبال ٹاﺅن کی نشوا کے والد کو دھمکیاں نے زخموں پر نمک چھڑک دیا۔ دھمکیوں کی فوٹیج منظر عام پر آنے کے بعدموصوف پولیس افسر کی اصلیت کھل کر سامنے آ گئی۔

 

ایس پی گلشن اقبال طاہر نورانی کی زیر علاج نشوا کے والد کو ہسپتال میں دھکیاں دیں، ویڈیو میں الفاظ کو سنا جاسکتا ہے، جس میں ایس پی طاہر نورانی کی جانب سے نشوا کے والد کو ڈرانے کی کوشش کی گئی، والد قیصر کا کہنا تھا کہ بار بار طاہر نوارنی کا کہنا تھا کہ نقصان صرف آپ کا ہو گا۔

 

فوٹیج منظر عام پر آنے کے بعد طاہر نورانی کی جانب سے موقف دیا گیا کہ ہم قانونی کارروائی کے لیے سب سے پہلے پہنچے تھے اور نشوا کے والد کو کوئی دھمکی نہیں دی گئی۔

 

معاملہ سامنے پر سندھ پولیس حکام بھی جاگ اٹھے اورطاہر نورانی کو عہدے سے ہٹا دیا اور تحقیقاتی کمیٹی بنا دی گئی۔

احمد علی کیف  4 روز پہلے

متعلقہ خبریں