شہر قائد میں آندھی و مٹی کا طوفان، ایک ہلاک اور متعدد افراد زخمی

کراچی(پبلک نیوز) آندھی اور طوفان نے درخت اکھاڑ دیئے، گھروں کی چھتیں اڑ گئیں، مختلف حادثات میں ایک افراد جان سے گئے، بیس زخمی ہو گئے، ٹیپو سلطان سگنل کے قریب اسکول کی چھت گرنے سے 5 بچے زخمی ہو گئے۔

 

کراچی میں ایران سے داخل ہونے والے نئے سسٹم کے باعث مختلف علاقوں میں تیزگرد آلود ہواؤں اور مٹی کے طوفان نے شہریوں کا سانس لینا مشکل کر دیا۔ تیز ہواؤں اور گرد آلود طوفان کے باعث پیپلز کالونی میں درخت گرنے سے ایک شخص جاں بحق جبکہ ٹیپو سلطان سگنل کے قریب سکول کی چھت گرنے سے 5 بچے زخمی ہو گئے۔ شہر قائد کی فضا میں دھول مٹی کے باعث حد نگاہ کم جبکہ فضائی آپریشن معطل پروازیں تاخیر کا شکار ہیں۔ مختلف علاقوں میں طوفانی ہوائیں رات گئے سے چل رہی ہیں، جس کے باعث بجلی کے پول اور اشتہاری بورڈ بھی زمین پر آگرے ہیں۔

 

محکمہ موسمیات کے مطابق کراچی میں گرد آلود ہواوؤں کی رفتار 65 کلومیٹرفی گھنٹہ تھی، شہر میں گردوغبارکی فضاء ایک سے دورروز تک برقراررہے گی۔ شہر کا زیادہ سے زیادہ درجہ 34 ڈگری سینٹی گریڈ تک جانے کا امکان ہے۔ رات سے تیز ہواؤں سے چلنے والے سلسلے نے مختلف علاقوں میں بجلی کی فراہمی بھی معطل کر دی ہے، بلوچستان کے مختلف حصوں میں داخل ہونے والے نئے سسٹم نے کوئٹہ، چمن، زیارت، کوہلو اور گوادر میں بارش برسائی۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں