کچھ ضمیر فروشوں نے اپنا ضمیر فروخت کیا، شہبازشریف

 

اسلام آباد (پبلک نیوز) اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کا کہنا ہے کہ آج پھر دھاندلی زدہ الیکشن کی تاریخ دہرائی گئی۔ آج پھر دھاندلی زدہ الیکشن کی تاریخ دہرائی گئی۔ خفیہ رائے شماری کے دوران 14 ارکان کھسک گئے۔ آئندہ ہفتے اے پی سی بلا کر لائحہ عمل طے کریں گے۔

 

تفصیلات کے مطابق اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کا سینیٹ الیکشن کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ایوان میں آج سلیکٹڈ حکومت ہار گئی۔ حکومت عوام کے سامنے شرمندہ ہوگئی۔ آج پھر دھاندلی زدہ الیکشن کی تاریخ دہرائی گئی۔ تحریک پیش ہوئی تو 64 ارکان کی حمایت حاصل تھی۔ خفیہ رائے شماری کے دوران 14 ارکان کھسک گئے۔

 

شہبازشریف کا مزید کہنا تھا کہ کچھ ضمیر فروشوں نے اپنا ضمیر فروخت کیا۔  14ضمیر فروشوں نے جمہوریت کو نقصان پہنچایا۔ 14 ضمیر فروش سینیٹرز کون تھے، قوم کو بتائیں گے۔ آئندہ ہفتے اے پی سی بلا کر لائحہ عمل طے کریں گے۔

 

اسی موقع پر چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ عوام دشمن حکومت کے حملے جاری ہیں۔ آج سینیٹ میں بہت بڑا حملہ کیا گیا۔ کٹھ پتلی کامیاب ہوئے، عوام پر ظلم کیا گیا۔ حکومت نے پٹرول کی قیمتوں میں اضافہ کیا۔ دنیا میں قیمتیں کم ہو رہی ہیں، یہاں بڑھ رہی ہیں۔ تمام اپوزیشن جماعتیں متحد ہیں۔

 

بلاول بھٹو کا مزید کہنا تھا کہ ہم چیئرمین سینیٹ کا ڈٹ کر مقابلہ کریں گے۔ جن لوگوں نے ضمیر بیچا ان سے حساب لیں گے۔ اخلاقی طور پر چیئرمین سینیٹ کو استعفیٰ دے دینا چاہیے تھا۔ ہم ہار کے بھی جیت گئے، یہ کس منہ سے خوشیاں منا رہے ہیں۔

 

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں