اپوزیشن جماعتوں کا وفاقی بجٹ کو مسترد کرتے ہوئے شدید ردِ عمل کا اظہار

اسلام آباد(پبلک نیوز) پیپلزپارٹی اور ن لیگ سمیت اپوزیشن نے وفاقی بجٹ مسترد کر دیا۔ چیئرمین پی پی پی بلاول کا کہنا ہے کہ بجٹ معاشی خود کشی ہے، منظور نہیں ہونے دیں گے۔ مریم نواز نے کہا یہ بجٹ نہیں عوام کا خون چوسنے کا نسخہ ہے۔

 

اپوزیشن نے وفاقی بجٹ مستر کر دیا، پیپلزپارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ کوئی باضمیر مہنگائی اور بے روزگاری کو ووٹ نہیں دگا، بجٹ معاشی خود کشی ہے پیپلز پارٹی اسے منظور نہیں ہونے دے گی۔ بلاول زرداری نے کہا ہے کہ عمران خان نے آدھی رات کو خوفزدہ ہو کر خطاب کیا، ڈر ہے آئی ایم ایف سے بجٹ منظور نہ ہوا تو ان کی حکومت گر جائے گی۔

 

نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے کہا کہ یہ بجٹ نہیں ملکی نااہلوں اور عالمی ساہو کاروں کا عوام کا خون چوسنے کا نسخہ ہے۔ مہنگائی، بیروزگاری اور غربت کی یہ کالی دستاویز نااہل حکومت کا ایک اور سیاہ کارنامہ ہے، یہ پاکستان کو کئی سال پیچھے دھکیل دے گا۔ ترجمان ن لیگ مریم اورنگزیب نے کہا کہ ایک نہیں 10 کمیشن بنائیں ہمارے پاس ایک ایک روپے کا حساب ہے۔


انہوں نے مزید کہا کہ آئی ایم ایف سے معاہدے سے نظر ہٹانے کے لیے کنٹینر والی گفتگو کی گئی۔ اپوزیشن جیل جانے سے ڈرنے والی نہیں، دھمکیوں سے کچھ نہیں ہوگا۔ خورشید شاہ بولے خان صاحب! آپ قائد ایوان ہیں، اسٹوڈیو میں تقریر کرنا کمال نہیں، پارلیمنٹ میں آ کر ہمت کریں، کہا کہ اپوزیشن رہنماؤں کی گرفتاریاں ہی ریاست مدینہ کے قیام کا طریقہ ہے؟ ہم نے احتجاج کا عندیہ دیا تو ان کی چیخیں نکل جائیں گی۔

عطاء سبحانی  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں