قومی اسمبلی اجلاس میں متحدہ اپوزیشن کے احتجاج کی حکمت عملی مرتب، بائیکاٹ نہ کرنے کا فیصلہ

اسلام آباد (پبلک نیوز) قومی اسمبلی اجلاس میں متحدہ اپوزیشن نے احتجاج کے حوالے سے حکمت عملی ترتیب دے لی ہے۔ ارکان بازوؤں پر کالی پٹیاں باندھ کر شرکت کریں گے جبکہ حلف کا بائیکاٹ نہ کرنے پر بھی مشاورت ہوئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق انتخابات میں دھاندلی کے الزمات پر اپوزیشن کا احتجاج جاری رکھنے کا فیصلہ سامنے آیا ہے۔ ایوان کے اندر بھی احتجاجی تحریک چلائی جائے گی۔

پبلک نیوز ذرائع کے مطابق 13 اگست کے اجلاس سے قبل اپوزیشن جماعتوں کے علیحدہ علیحدہ اجلاس ہوں گے۔ متحدہ اپوزیشن کا سابق صدر آصف زرداری، مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کی مشترکہ صدارت میں اجلاس کا بھی امکان ہے۔ اس اجلاس میں احتجاجی عمل کو حتمی شکل دی جائے گی۔

 ذرائع کا کہنا ہے کہ پہلے اجلاس میں حلف برداری کے دوران اپوزیشن اراکین کالی پٹیاں باندھ کر اجلاس میں شرکت کریں گے۔ تاہم اس کا حتمی فیصلہ اجلاس سے قبل متحدہ اپوزیشن کرے گی۔ عمران خان کے ساتھ حلف نہ اٹھانے اور پی ٹی آئی اراکین کے حلف اٹھانے کے بعد اپوزیشن اراکین کے حلف اٹھانے کی تجویز بھی زیر غور ہے۔

اپوزیشن پہلے اجلاس ہی سے پی ٹی آٹی اور اس کی اتحادی جماعتوں پر دباؤ رکھنے کی پالیسی اپنانے کا فیصلہ کر چکی ہے۔

احمد علی کیف  2 ماه پہلے

متعلقہ خبریں