شریف برادران کیلئے بُری خبر، رائیونڈ روڈ کرپشن کیس میں دوبارہ تحقیقات کا حکم

لاہور(پبلک نیوز) شریف برادران کے لیے بری خبر، چیئرمین نیب نے رائیونڈ روڈ کرپشن انکوائری بند کرنے سے متعلق رپورٹ مسترد کرتے ہوئے دوبارہ انویسٹی گیشن کا حکم دے دیا۔

 

چیئرمین نیب نے رائیونڈ روڈ کرپشن انکوائری بند کرنے سے متعلق رپورٹ مسترد کرتے ہوئے دوبارہ انویسٹی گیشن کا حکم دے دیا۔ 17 اپریل 2000 میں شروع کی گئی انکوائری میں سابق وزیر اعظم نواز شریف اور سابق وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کو نامزد کیا گیا ہے۔  نیب کے مطابق شریف برادران نے اپنی جاتی امرا کی رہائش گاہ کیلئے سرکاری فنڈز سے سڑک کی تعمیر کروائی اور 12 کروڑ 56 لاکھ روپے سے زائد رقم کی کرپشن کی گئی۔

 

نیب ذرائع کے مطابق 2016 تک کرپشن انکوائری التواء کا شکار رہی۔ 2016 کے بعد دوبارہ انکوائری پر کام شروع کیا گیا اور 2017 میں نیب کے انویسٹی گیشن آفیسر نے انکوائری بند کرنے کی سفارش کی ۔ نیب کے مطابق ایک سکول اور ڈسپنسری کا بجٹ استعمال کرکے شریف برادران نے اپنی رہائش گاہ کیلئے سڑک تعمیر کروائی۔

 

چیئرمین نیب نے معاملے کی براہ راست انویسٹی گیشن کا حکم دیا، کرپشن انکوائری میں ضلع کونسل کے سابق  افسران، ایل ڈی اے کے افسران اور ٹھیکیدار کو بھی نوٹس جاری کیا گیا، سابق وزیر اعظم، وزیر اعلی پنجاب، ضلع کونسل، ایل ڈی اے اور ٹھیکیدار سے رائے ونڈ روڈ کی تعمیر کا ریکارڈ طلب کیا گیا۔

عطاء سبحانی  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں