پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ، بھارت کی جلن ایک بار پھرعیاں

اسلام آباد (پبلک نیوز) پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ، بھارت کی جلن اور حسد ایک بار پھر عیاں ہو گئی، بھارتی حکومت نے اگلے ماہ چین میں بیلٹ اینڈ روڈ فورم میں شرکت سے انکار کر دیا۔ بھارت سرکار کی نرالی منطق یہ ہے کہ سی پیک میں نئی دہلی کے تحفظات کو مد نظر نہیں رکھا گیا۔

 

پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ، بھارت کی جلن ایک بار پھرعیاں ہو گئی۔ بھارتی حکومت نے اگلے ماہ چین میں بیلٹ اینڈ روڈ فورم میں شرکت سے انکار کر دیا۔

 

سی پیک میں نئی دہلی کے تحفظات کو مدنظر نہیں رکھا گیا، بھارت نے انوکھی منطق پیش کر دی۔ پاک چین اقتصادی تعاون کے عظیم منصوبہ سی پیک پر بھارت جل گیا۔ بیجنگ میں متعین بھارتی سفیر وکرم مسری کا کہنا ہے کہ سی پیک میں بھارت کے تحفظات کو مد نظر نہیں رکھا گیا اور کوئی ملک اپنی خودمختاری اور علاقائی سلامتی کے خلاف اقدام کا حصہ نہیں بن سکتا۔

 

بھارت پہلے بھی گلگت بلتستان سے سی پیک روٹس کو گزار نے پر اعتراض کر چکا ہے لیکن اب اس نے اسے بھونڈے جواز کو بنیاد بنا کر اگلے ماہ چین میں بیلٹ اینڈ روڈ فورم فار انٹرنیشل کو آپریشن میں شرکت سے انکار کر دیا ہے۔ فورم میں پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کے ساتھ اٹلی اور سنگاپور کے وزرائے اعظم کی شرکت بھی متوقع ہے۔

 

بیجنگ میں بھارتی سفیر وکرم مسری نے چین کے سرکاری اخبار گلوبل ٹائمز کو انٹرویو میں کہنا تھا کہ چین کے بیلٹ اینڈ روڈ انیشی ایٹو پر بھارت کا موقف بلکل واضح ہے اس منصوبے میں بھارت کی علاقائی سلامتی اور خودمختاری کا احترام ملحوظ خاطر نہیں رکھا گیا۔

حارث افضل  4 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں