پاکستان گرے لسٹ سے نکلے گا یا نہیں، فیصلہ ایف اے ٹی ایف اجلاس میں20 جنوری کو ہو گا

اسلام آباد (پبلک نیوز) پاکستان پر بلیک لسٹ کی لٹکتی تلوار کا خطرہ ٹلنے کی روشن امید پیدا ہو گئی۔ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے پاکستانی اقدامات کو اطمینان بخش قرار دے دیا۔ پاکستان کو گرے لسٹ سے نکالنے سے متعلق فیصلہ ایف اے ٹی ایف سربراہ اجلاس میں ہو گا۔

 

ایشیاء پیسفک گروپ کیساتھ پاکستانی حکام کے تین روزہ مذاکرات اسٹریلیا کے شہر سڈنی میں ہوئے۔ پاکستانی وفد نے دہشت گردی کے خلاف فنڈنگ کی روک تھام سے متعلق اقدامات سے آگاہ کیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان نے کالعدم مذہبی تنظمیوں کے خلاف ایکشن پر بھی بریفنگ دی۔ پاکستانی حکام نے موقف اپنایا کہ کلعدم تنظمیوں کے اکاؤنٹ اور اثاثے منجمند کیے گئے۔

 

پاکستانی وفد نے منی لانڈرنگ کی روک تھام کے اقدامات پر بھی بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ جعلی اکاؤنٹس کے خلاف بھی کارروائی کی جا رہی ہے۔ ایف اے ٹی ایف حکام نے پاکستان کی جانب سے منی لانڈرنگ کی روک تھام کے اقدامات پر اطمینان کا اظہار کردیا۔ دہشت گردوں کی مالی معانت پر بھی اٹھائے گئے اقدامات تسلی بخش قرار دیئے۔

 

ذرائع کے مطابق ایف اے ٹی ایف نے پاکستانی حکام کو مزید اقدامات اٹھانے کی تجویز دی ہے۔ پاکستان کو گرے لسٹ سے نکالنے سے متعلق فیصلہ ایف اے ٹی ایف سربراہی اجلاس میں ہوگا۔ ایف اے ٹی ایف سربراہی اجلاس 20 جنوری کو آسٹریلیا کے شہر سڈنی میں ہوگا۔

حارث افضل  5 ماه پہلے

متعلقہ خبریں