2018 میں شہرت کی بلندیوں پر چمکتے فلمی ستارے جو بجھ گئے

لاہور (حسنین چوہدری) موت زندگی کی ایک ایسی حقیقت ہے جس کو کبھی جھٹلایا نہیں جاسکتا، سال 2018 میں فن کی بلندیوں پر چمکتے کئی ستارے بجھ گئے۔

 

کسی بھی قد آور شخصیت کا دنیا سے رخصت ہو جانا ناقابل تلافی نقصان ہوتا ہے۔ سال 2018 میں فن سے وابستہ کئی شخصیات اپنے پر ستاروں کو داغ مفارقت دے گئیں، رواں برس کے پہلے ماہ معرو ف ڈرامہ نگاراور صحافی منو بھائی اپنے پیاروں سے بچھڑ گئے۔ دھنوں کے ذریعے دلوں کے تار چھڑنے والے عظیم موسیقار استاد نذر حسین اپنے مداحوں کو سوگوار کرگئے۔ اپنی اداؤں سے دلوں پر راج کرنے والی اداکارہ نگار سلطانہ، لیجنڈ اداکار قاضی واجد اور ٹی وی ڈرامہ عینک والا جن سے شہرت حاصل کرنے والے اداکار منا لاہوری جیسے فن کی بلندیوں پر چمکنے والے ستارے بھی بجھ گئے۔

 

اسی طرح اجوکا تھیٹر کی بانی، سٹیج اور ٹی وی کی معروف فنکارہ اور انسانی حقوق کی سرگرم کارکن مدیحہ گوہر ہم سے بچھڑ گئی، مزاحیہ اداکار چکرم، سینئر اداکارہ کلثوم سلطانہ، معروف ادیب اور مزاح نگار مشتاق یوسفی، ٹی وی اور فلم کے نامور اداکار علی اعجاز اور ہداتکار الطاف قمر بھی خالق حقیقی سے جاملے۔

 

2018 جاتے جاتے فہمیدہ ریاض کی صورت میں پاکستان کا نا قابل تلافی نقصان کرگیا۔ فہمیدہ ریاض اردو شاعری کا ایک بہت بڑا نام تھیں، وہ 15 سے زیادہ شاعری کی کتابوں کی مصنف تھیں۔ 21 نومبر 2018 اردو شاعری کا یہ بہت بڑا نام 72 برس کی عمر میں ہم سے جدا ہوگیا۔

 

2018 میں ان چمکتے دمکتے ستاروں کی صورت میں ہونے والا ناقابل تلافی نقصان کبھی پورا نہیں ہوپائے گا، دعا ہے اللہ ان کو جوار رحمت میں کروٹ کروٹ جنت عطا فرمائے۔

حارث افضل  8 ماه پہلے

متعلقہ خبریں