کرتار پور راہداری، پاکستان کی جانب سے تیاریاں مکمل

 

لاہور (پبلک نیوز) کرتار پور راہداری پر پاکستان اور بھارت کے مابین مزاکرات کا تیسرہ دور مکمل ہوگیا۔ ترجمان وزارت خارجہ ڈاکٹر فیصل نے کہا ہے کہ 2 سے 3 نکات کے علاوہ تمام معاملات طہ ہو گئے ہیں۔ مذاکرات کے اگلے سیشن کے لیے بھارت کو پاکستان آنے کی دعوت دی ہے۔

 

تفصیلات کے مطابق کرتار پور راہداری پر مذاکرات کے لیے پاکستان کا 19 رکنی وفد ترجمان وزارت خارجہ ڈاکٹر فیصل کی سربراہی میں بھارت گیا۔ مذاکرات کے بعد میڈیا بریفنگ میں ترجمان وزارت خارجہ ڈاکٹر فیصل کا کہنا تھا کہ مذاکرات خوشگوار ماحول میں ہوئے۔ 2 سے 3 معاملات حل ہونا باقی ہیں۔ مذاکرات کے اگلے سیشن کے لیے بھارت کو پاکستان آنے کی دعوت دی ہے۔

 

ڈاکٹر فیصل کا کہنا تھا کہ بھارت نے ڈوزیئر بھیجا تھا، جس کا جواب انھیں دے دیا گیا ہے۔ بھارت کو اپنے موقف میں لچک دکھانے کی ضرورت ہے۔ ہماری طرف سے کرتار پور راہداری پر 90 فیصد کام مکمل ہے۔ پاکستان بابا گرونانک کی 550 ویں سالگرہ پر کرتارپور راہداری کھول دے گا۔

 

ترجمان وزارت خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ کرتار پور آنے والے سکھوں کو کارڈ جاری کیے جائیں گے۔ 5000 سکھ یاتریوں سے زیادہ سکھ یاتریوں کو جگہ کے مطابق آنے کی اجازت دیں گے۔

احمد علی کیف  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں