ملک میں گیس کی مصنوعی قلت پیدا کرنے کا منصوبہ بے نقاب

پبلک نیوز: ملک میں گیس کی مصنوعی قلت پیدا کرنے کا منصوبہ بے نقاب، پاکستان ایل این جی کمپنی نے ایل این جی امپورٹ شپ کینسل کر دی۔ شپ میں 1لاکھ 30ہزار میٹرک ٹن ایل این جی درآمد کی جا رہی تھی۔

ذرائع وزرات پٹرولیم کے مطابق 1لاکھ 30ہزار میٹرک ٹن ایل این جی لے کر آنے والی شپ کو کینسل کر دیا گیا۔ پاکستان ایل این جی کمپنی حکام کا مؤقف ہے کہ مئی تک ملک میں ایل این جی موجود ہے۔ جون میں نئی شپ بھیجی جائے۔

ایل این جی شپ منسوخ ہونے سے قومی  خزانے کو 12 ارب روپے کا نقصان ہو گا جبکہ ایل این جی ٹرمینل کمپنی کو 1 ڈالر فی ایم ایم بی ٹی یو کپیسٹی چارجز بھی دینا پڑیں گے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ جون میں ایل این جی مہنگی ہو گی اور ترسیلی چارجز بھی بڑھ جائیں گے جس سے ملکی خزانہ کو مزید نقصان ہو سکتا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت نے پاور پلانٹس کے لیے فرنس آئل کی درآمد بند کی تھی۔ کیونکہ فرنس ائل سے مہنگی بجلی پیدا ہو رہی تھی جس پر آئل مافیا کی ملی بھگت سے ایل این جی شپ منسوخ کی گئی یہاں سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ اگر سٹاک موجود تھا تو پھر ایل این جی جہاز بک کیوں کیا گیا۔ حالانکہ سردیوں میں گیس کی طلب میں اضافہ سے حکومت کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

احمد علی کیف  7 ماه پہلے

متعلقہ خبریں