پاکستان نے آئی ایم ایف سے سخت شرائط پر قرضہ لینے سے انکار کر دیا

اسلام آباد (پبلک نیوز) پاکستان نے آئی ایم ایف سے سخت شرائط پر قرضہ لینے سے انکار کر دیا ہے۔ آئی ایم ایف اور حکومت میں مذاکرات کا پہلا دور بغیر کسی نتیجے کے ختم ہو گیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرت کا پہلا دور پچھلے دو ہفتے سے جاری رہنے کے بغیر کسی نتیجہ کے ختم ہو گیا۔ جس میں آئی ایم ایف کی جانب سے پاکستان کی مالی امداد کے لیے سخت شرائط سامنے آئیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف اور پاکستان پُر امید ہیں کہ اگلے سال 15 جنوری سے قبل کسی نتیجے پر پہنچیں گے۔ پاکستان نےآئی ایم ایف کےکچھ مطالبات تسلیم کرنے سے معذرت کرلی ہے جس میں روپے کی قدر میں کمی، ٹیکسوں کی شرح بڑھانے اور بجلی کی قیمتوں میں اضافہ پر ڈیڈ لاک برقرار ہے۔

آئی ایم ایف کی جانب سے پاکستان سے 20 سے 22 فیصد تک بجلی کی قیمت میں اضافہ کا مطالبہ کیا گیا جس سے پاکستان نے معذرت کر لی۔ پاکستان نے چین سے مالی معاونت کی تفصیلات فراہم کرنے سے بھی معذرت کرتے ہوئے  مؤقف اختیار کیا کہ ہماری کچھ ریڈ لائنز ہیں جنہیں عبور نہیں کیا جا سکتا۔

پاکستان کا وفد مذاکرات کے بارے میں اپنی رپورٹ پیش کرے گا جس کے بعد آئی ایم ایف کا وفد دوبارہ پاکستان آنے کے بارے میں فیصلہ کرے گا۔

احمد علی کیف  10 ماه پہلے

متعلقہ خبریں