پارتھینیم جڑی بوٹی سے انسانی صحت اور فصلوں کو تباہ ہونے سے بچایا جا سکتا ہے، ماہرین

اسلام آباد (پبلک نیوز) موسم کے بدلتے رنگ، کسان اور شعبہ زراعت سے تعلق رکھنے والے ہوجائیں ہوشیار، اس موسم میں تیزی سے پھیلنے اور نشونما پانے والی زہریلی پارتھینیم جڑی بوٹی سے اپنا بچاو ممکن بنائیں، اپنی صحت اور فصلوں کو تباہ ہونے سے بچائیں۔

اسلام آباد میں پارتھینیم کے تباہ کن اثرات کے حوالے سے سینٹر فار ایگریکچر اینڈ بائیو سائنسز کی جانب سے ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا۔ تقریب کے آغاز میں پارتھینیم  (گاجر بوٹی) کے انسانی صحت اور لائیو اسٹاک پر خطرناک اثرات مرتب ہونے کے حوالے سے خصوصی بریفنگ دی گئی۔ ڈاکٹر بینش کا کہنا تھا کہ پارتھینیم یا گاجر بوٹی ایسی جڑی بوٹی ہے جس سے انسانی صحت پر منفی  اثرات پڑتے ہیں۔ یہ ایک خطرناک الرجن ہے جو تیزی سے پاکستان میں پھیل رہا ہے۔

ڈاکٹر بابر احسان باجوہ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ یہ جڑی بوٹی بہت سے جلد کے امراض کا سبب بنتی ہے۔ نہ صرف انسانوں کے لیے مضر صحت ہے بلکہ جانوروں کے لیے بھی یہ خاصی خطرناک ثابت ہوتی ہے۔

زرعی ماہرین کا کہنا ہے کہ عوام میں اس حوالے سے آگاہی مہم کا انعقاد کیا جانا چاہیے تا کہ وہ اس جان لیوا جڑی بوٹی سے بچ سکیں۔

حارث افضل  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں