پی ایچ ڈی ڈاکٹرز کا احتجاج، ڈگریاں نذر آتش، حکومت کیخلاف نعرے بازی

اسلام آباد (پبلک نیوز) پی ایچ ڈی کرنے کے بعد بھی بنی گالہ میں سڑکوں پر خوار کیوں ہو رہے ہیں۔ پبلک نیوز تعلیم یافتہ نوجوانوں کی آواز بن گیا۔ تین سال سے کوئی نوکری نہیں۔ کئی پی ایچ ڈی ڈاکٹرز ٹیکسی چلانے جبکہ بعض مزدوری کرنے پر مجبور ہو گئے۔

پی ایچ ڈی ڈاکٹرز سڑکوں پر کیوں آئے۔ پبلک نیوز وجوہات سامنے لے آیا۔ سابقہ حکومت کی وعدہ خلافیوں اور ہائر ایجوکیشن کمیشن کی عدم سرپرستی ڈاکٹرز کو سڑکوں پر لے آئی۔ حکومت نے پی ایچ ڈی مکمل ہونے کے بعد پانچ سال سرکاری اداروں میں ملازمت کی شرط رکھی تھی اور تحریری معاہدے بھی کیے تھے۔ پی ایچ ڈی ڈاکٹرز نے علامتی طور پر اپنی ڈگریاں نظر آتش کیں اور وزیر اعظم سکواڈ کے سامنے شدید نعرے بازی بھی کی۔

پی ایچ ڈی کے لیے 800 سکالرشپس پر حکومت نے اڑھائی ارب روپے خرچ کیے۔ تعلیم مکمل ہونے کے بعد حکومت نے سب کو بے یارو مدد گار چھوڑ دیا۔ تین سال سے کوئی نوکری نہیں۔ کئی پی ایچ ڈی ڈاکٹرز ٹیکسی چلانے، بعض مزدوری کرنے پر مجبور ہوگئے ہیں۔

احتجاجی ڈاکٹرز نے مطالبہ کیا کہ ملک میں 36 ہزار پی ایچ ڈی اساتذہ کی بھرتی کی گنجائش ہے۔ حکومت سروس سٹرکچر میں پی ایچ ڈی کو الگ مقام دے۔ ہم کئی کئی سال سے بے روزگار ہیں۔ گھروں کا چولھا جلانا مشکل ہو گیا ہے۔ مظاہرین نے  مطالبات حل ہونے تک احتجاج جاری رکھنے کا عزم کیا ہے۔

احمد علی کیف  1 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں