سابق صدر آصف زرداری اور فریال تالپور کے جسمانی ریمانڈ میں 10 روز کی توسیع

اسلام آباد (پبلک نیوز) احتساب عدالت نے سابق صدر آصف زرداری اور فریال تالپور کے جسمانی ریمانڈ میں 10 روز کی توسیع کر دی ہے اور 8 اگست کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا۔

 

تفصیلات کے مطابق میگا منی لانڈرنگ اور پارک لین ریفرنس میں آصف علی زرداری اور فریال تالپور کو اسلام آباد کی احتساب عدالت کے روبرو پیش کیا گیا۔ وکیل آصف زرداری لطیف کھوسہ نے گزشتہ سماعت آصف زرداری کے پیش کردہ اخباری تراشوں پر دلائل دیئے۔ لطیف کھوسہ نے شہزاد اکبر سے متعلق خبر پڑھ کر سنائی۔ آصف زرداری بھی روسٹرم پر آ گئے۔ جج محمد بشیر نے کہا کہ آپ نے بیٹھنا ہے تو بیٹھ جائیں۔ لطیف کھوسہ نے کہا یہ کیس کو دیکھنا چاہتے ہیں۔

 

جس کے بعد احتساب عدالت نے آصف زرداری کے جسمانی ریمانڈ میں 10 روز کی توسیع کی درخواست کی۔ جس پر آصف زرداری نے اگلی سماعت عید کے بعد رکھنے کی اپیل کی۔ جج نے ریمارکس دیئے کہ ایک وقت میں زیادہ سے زیادہ 15 روز کا ریمانڈ ہو سکتا ہے، عید کے بعد نہیں رکھ سکتے۔

 

سماعت سے قبل کمرہ عدالت کے باہر میڈیا سے غیر رسمی گفتگو میں آصف زرداری کا کہنا تھا کہ "وہ کہتے ہیں کروڑوں کھا گئے، عبدالحفیظ شیخ کو بھی پکڑیں ہمارے ساتھ ڈالیں جیل میں اور پوچھیں کہاں ہیں پیسے"۔ آصف زرداری نے پیشی کے بعد بلاول اور بیٹی آصفہ سے بھی ملاقات کی۔ فریال تالپور، رحمان ملک اور دیگر رہنما بھی اس موقع پر موجود تھے۔ ملاقات کے بعد نیب حکام آصف زرداری کو لے کر روانہ ہو گئے۔

عطاء سبحانی  2 ہفتے پہلے

متعلقہ خبریں