پی کے ایل آئی ازخود نوٹس: ذمہ داروں کیخلاف مقدمہ درج نہ کرنے کی استدعا مسترد

لاہور (ادریس شیخ) پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹی ٹیوٹ (پی کے ایل آئی) میں بے ضابطگیوں سے متعلق ازخود نوٹس کی سماعت ہوئی، چیف جسٹس نے ذمہ داروں کے خلاف مقدمہ درج نہ کرنے کی استدعا مسترد کر دی۔

ڈاکٹر سعید احمد کے وکیل اعتزاز احسن نے کہا کہ ہمیں اینٹی کرپشن رپورٹ فراہم نہیں کی گئی، جواب داخل کرانا چاہتے ہیں، ایف آئی آر درج نہ ہو۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ایف آئی آر درج کیوں نہ ہو۔

تفصیلات کے مطابق پی کے ایل آئی میں بےضابطگیوں سے متعلق ازخود نوٹس کی سماعت ہوئی۔ جس میں ذمہ داروں کے خلاف مقدمہ درج نہ کرنے کی استدعا مسترد کر دی گئی۔

Image result for Pakistan Kidney and Liver Institute

اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ ہمیں اینٹی کرپشن رپورٹ فراہم نہیں کی گئی، جواب داخل کرانا چاہتے ہیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ تو جواب داخل کرا دیں۔ اعتزاز احسن نے کہا کہ ہم جواب داخل کرا دیتے ہیں مگر ایف آئی آر درج نہ ہو۔

چیف جسٹس نے کہا کہ کیوں ایف آئی آر درج نہ ہو؟ جسٹس اعجازالاحسن نے کہا کہ یہ ساری تحقیقات ان لوگوں پر چھوڑ دیں، ہم کہہ دیتے ہیں اینٹی کرپشن غیرقانونی گرفتاریاں نہ کرے۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کتنے دن میں جواب دیں گے؟ اعتزاز احسن نے کہا کہ بدھ تک جواب جمع کرا دیں گے۔ خیال رہے کہ کیس کی سماعت 16 جنوری تک ملتوی کر دی گئی ہے۔

احمد علی کیف  3 روز پہلے

متعلقہ خبریں