وزیراعظم کا بے نامی جائیدادوں کی نشاندہی کرنے والوں کیلئے 10 فیصد کمیشن کا اعلان

 

اسلام آباد (پبلک نیوز) پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ مدینہ کی ریاست میں تمام نظام ماڈرن تھا۔ اس وقت 60 فیصد آبادی 30 برس سے کم عمر کی ہے۔ نوجوانوں کو ہنر سکھادیں تو یہ ہماری طاقت بنیں گے۔

 

'احساس پروگرام' کے حوالے سے افتتاحی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ احساس پروگرام کےتحت نوجوانوں اور کمزور طبقے کواوپر لائیں گے۔ احساس پروگرام کےتحت نوجوانوں اور کمزور طبقےکواوپر لائیں گے۔ اس وقت 60 فیصد آبادی 30برس سے کم عمر کی ہے۔

 

انھوں نے کہا کہ بلا سود قرض فراہم کریں گے۔ نوجوانوں کو ہنر سکھادیں تو یہ ہماری طاقت بنیں گے۔ افسوس سےکہنا پڑتا ہے کہ جو ملک اسلام کے نام پربنا اس ملک میں انسانیت نظرنہیں آئی۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا مدینہ کی ریاست میں تمام نظام ماڈرن تھا۔

 

وزیراعظم نے کا کہنا تھا کہ ریاست مدینہ میں غریبوں کا احساس تھا، وسائل نہیں تھے لیکن کمزور طبقے کا احساس تھا، کچھ لوگ دین کو اپنی سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کرتے ہیں۔ جب میں نے اپنی تاریخ پڑھی تو مجھے احساس ہوا کہ یہ ریاست مدینہ کی خوبیاں تھیں، جو دنیا کی پہلی فلاحی ریاست تھی، ہمیں کہیں یہ نہیں پڑھایا گیا کہ ریاست مدینہ ماڈل اسٹیٹ تھی۔

 

عمران خان نے مزید کہا کہ سابق حکمران صرف ترقی کے دعوے کرتے تھے۔ سابق حکمرانوں نے علاج کے لیے ایک بہتر اسپتال نہیں بنایا۔ جو شخص بھی ملک میں یا بیرون ملک کسی پاکستانی کی بے نامی پراپرٹی کی نشاندہی کرے گا اسے 3 فیصد کے بجائے 10 فیصد حصہ دیا جائے گا ۔ اور جو پیسہ بے نامی پراپرٹی سے آئے گا وہ سارا احساس پروگرام کو جائے گا۔

 

تقریب میں ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ موٹروے بنانے سے ترقی نہیں ہوتی، آج ہم سود کے بغیر قرضہ دے رہے ہیں، ہماری عوام ہماری ذمہ داری ہے، کوئی باہر سے نہیں آئے گا۔ شہبازشریف کہتے ہیں اتنی سزا دینا جتنی برداشت کرسکو، میں توموت بھی برداشت کرسکتاہوں۔ ڈر آپکو ھے کیوںکہ آپ کا سارا پیسا باہرپڑا ھے ۔اس لیے آپکو فکر ہے کہ کہیں مرنا جاؤں۔

احمد علی کیف  3 ماه پہلے

متعلقہ خبریں