وزیراعظم نے وزراء کے بیرون ملک دوروں کو محدود کر دیا

اسلام آباد (پبلک نیوز) وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جو 6 گھنٹے سے زائد تک جاری رہا۔ وفاقی کابینہ نے نیوزی لینڈ مسجد میں دہشگردی کی مزمت اور شہداء کے لواحقین سے اظہار ہمدردی کیا۔ وزیر اعظم عمران خان اور کابینہ ارکان نے سانحہ نیوزی لینڈ کے شہداء کے لیے خصوص دعا کی۔

وزیر اعظم و کابینہ ارکان کی جانب سے کہا گیا کہ مشکل کی گھڑی میں متاثرہ خاندانوں کے ساتھ ہیں۔ دہشتگردی پوری دنیا کا مسئلہ ہے۔ وزیر اعظم اور کابینہ نے پی ایس ایل کے کامیاب انعقاد پر اطمینان کا اظہار کیا۔ وزیراعظم کی جانب سے کابینہ کو سادگی اور کفایت شعاری پر سختی سے عملدرآمد کی ہدایت کی گئی۔ کابینہ اجلاس میں 23 مارچ کی پریڈ کی تیاریوں پر بریفنگ دی گئی۔ کابینہ اجلاس میں ملکی سلامتی کی صورتحال کا جائزہ لیا۔

عمران خان نے کابینہ ارکان کو سادگی اور کفایت پر عمل درآمد یقینی بنانے کی ہدایت کی۔ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں 30 نکاتی ایجنڈے میں سے بیشتر کی منظوری دی گئی۔ وفاقی کابینہ اجلاس میں"انٹرنینمنٹ اور گفٹ" کے لیے بجٹ ختم کرنے کی منظوری دے دی۔

احتساب عدالت نمبر 2 راولپنڈی کی بطور احتساب عدالت نمبر تین اسلام آباد منتقلی کے معاملہ پر بھی غور کیا گیا۔ ایف بی آر اصلاحات کے مجوزہ پلان پر بھی کابینہ کو بریفنگ دی گئی۔ وفاقی کابینہ اجلاس میں انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کی ازسرنو تشکیل کا جائزہ لیا گیا۔

وزارت بین الصوبائی رابطہ اور وزارت اطلاعات میں یوتھ ڈویلپمینٹ کے معاہدے کی منظوری دی گئی۔ وفاقی کابینہ نے کلین اینڈ گرین پاکستان کے تحت مواصلات اسٹریٹجی تشکیل دینے کی بھی منظوری دے دی۔ متروکہ وقف املاک بورڈ کے چیئرمین کی تقرری کے معاملہ پر بھی غور کیا گیا۔

احمد علی کیف  1 ماه پہلے

متعلقہ خبریں